سہراب جی جمہوریت کو مضبوط کرنے والی شخصیت کے بطور یاد کیے جائیں گے: چیف جسٹس

جسٹس رمن نے کہا کہ عدالتی دنیا سے تقریباً 68 برس کی وابستگی میں سہراب جی نے انسانی حقوق اور بنیادی حقوق سے متعلق عالمی فلسفۂ قانون کو ترقی دینے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔

سابق اٹارنی جنرل آف انڈیا سولی سہراب جی / Getty Images
سابق اٹارنی جنرل آف انڈیا سولی سہراب جی / Getty Images
user

یو این آئی

نئی دہلی: سپریم کورٹ کے چیف جسٹس این وی رمن نے سابق اٹارنی جنرل اور معروف ماہرِ قانون سولی جہانگیر سہراب جی کے انتقال پر اظہار تعزیت کرتے ہوئے کہا کہ انسانی حقوق اور بنیادی حقوق کے حامی سہراب جی جمہوری ستونوں کو مضبوط کرنے والی شخصیت کے بطور یاد کیے جاتے رہیں گے۔

جسٹس رمن نے جمعہ کو جاری اپنے تعزیتی پیغام میں کہا کہ سابق اٹارنی جنرل سولی جہانگیر سہراب جی کے انتقال کے بارے میں جا کر انھیں سخت تکلیف ہوئی ہے۔ عدالتی دنیا سے تقریباً 68 برس کی وابستگی میں سہراب جی نے انسانی حقوق اور بنیادی حقوق سے متعلق عالمی فلسفۂ قانون کو ترقی دینے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔


انہوں نے سہراب جی کو پریس ریلیز میں آزادی کا قائد قرار دیا اور کہا کہ ’انہوں نے (سہراب جی) حال تک آئے دن مشکل قانونی مسائل کی باریکیوں پر روشنی ڈالنے کے لیے میڈیا کو ایک اسٹیج کے طور پر استعمال کیا اور لاکھوں افراد کو قانون کا سبق پڑھایا ورنہ ان لوگوں کو عدالتی دنیا میں ہونے والے واقعات کے بارے میں کچھ بھی معلوم نہیں ہوتا‘۔ چیف جسٹس نے کہا کہ ’جب سے میں نے ایک وکیل کے طور پر پریکٹس شروع کی، تو اس وقت سے ان کے کارناموں کو پڑھ کر، ان کے سیمینار کو سن کر اور ان کی دور رس قیادت اور صلاح پر عمل کرکے ذاتی طور پر بہت کچھ حاصل کیا ہے‘۔

جسٹس رمن نے کہا کہ انسانیت اور مہربانی میں ڈوبے رجحان نے ان کے قانونی کاموں کو بھی متعارف کیا ہے۔ انھیں جمہوریت کے ستونوں کو مضبوط کرنے والی عظیم شخصیت کے طور پر ہمیشہ یاد کیا جاتا رہے گا۔ میں ان کی روح کو پرنم خراج عقیدت پیش کرتا ہوں۔ میں ذاتی طور پر اور سپریم کورٹ کی جانب سے سولی سہراب جی کے اہل خانہ، دوستوں اور بے شمار مداحوں کے تئیں اظہار تعزیت کرتا ہوں‘۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔