اجیت پوار کا ساتھ دینے والے اراکین اسمبلی پر ہوگی کارروائی: شرد پوار

شرد پوار نے شیو سینا سربراہ ادھو ٹھاکرے کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس میں کہا کہ کانگریس، شیوسینا اور این سی پی نے مل بیٹھ کر مہاراشٹر میں حکومت بنانے کا فیصلہ کیا تھا اور ہم سب اب بھی متحد ہیں۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

ممبئی: نیشنلسٹ کانگریس پارٹی کے سربراہ شرد پوار نے مہاراشٹر میں تازہ سیاسی صورتحال سے خود کو الگ کرتے ہوئے کہا ہے کہ بھارتیہ جنتا پارٹی کے ساتھ حکومت بنانے کا ان کا نہیں بلکہ یہ فیصلہ پارٹی لیڈر اجیت پوار کا ہے اور ان کے ساتھ جانے والے ممبران اسمبلی کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔

شرد پوار نے شیو سینا سربراہ ادھو ٹھاکرے کے ساتھ ہفتہ کے روز یہاں مشترکہ پریس کانفرنس میں کہا کہ کانگریس، شیوسینا اور این سی پی نے مل بیٹھ کر مہاراشٹر میں حکومت بنانے کا فیصلہ کیا تھا لیکن جو صورتحال سامنے آئی ہے اس میں پوری طور پر اجیت پوار کا ہاتھ ہے۔ انہوں نے خبردار کیا کہ پارٹی کے جو رکن اسمبلی اجیت پوار کے ساتھ جائیں گے ان کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔

این سی پی سربراہ شرد پوار نے کہاکہ ’’میرے ساتھ پہلے بھی ایسا ہوتا رہا ہے، مجھے فکر نہیں ہے۔ میرے پاس نمبر ہیں، مستقل حکومت ہم ہی بنائیں گے‘‘۔شرد پوار نے کہا کہ تینوں جماعتوں کے رکن اسمبلی کے ساتھ ہی کچھ آزاد امیدوار کے تعاون سے شیو سینا کی قیادت میں مخلوط حکومت بن رہی تھی اور اس میں 169 سے 170 تک ممبران اسمبلی کی تعداد ہو رہی تھی۔ تینوں جماعتوں نے شیو سینا کی قیادت میں حکومت بنانے کا فیصلہ کیا تھا۔ فڑنویس کے پاس اکثریت نہیں ہے اور وہ ایوان میں اکثریت ثابت نہیں کر پائیں گے۔

شرد پوار کا یہ بھی کہنا ہے کہ’’یہ فیصلہ اجیت کا ہے۔ مجھے یقین ہے کہ این سی پی کا کوئی بھی رکن اسمبلی اجیت کے ساتھ نہیں جائے گا۔ اگر جو ممبر اسمبلی ان کے ساتھ جانے کی سوچ رہے ہیں، انہیں پارٹی مخالف قوانین کا علم ہونا چاہیے۔ جو این سی پی سے باہر جانے کا فیصلہ کریں گے ان كو مہاراشٹر کے لوگ سبق سکھائیں گے‘‘۔ شرد پوار نے کہا کہ جو لوگ بی جے پی کے ساتھ جائیں گے ان کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس واقعے کے بعد کچھ لوگوں نے ان سے رابطہ کیا لیکن تب تک انہیں اس بات کا اندازہ ہی نہیں تھا۔

next