شاہ اور شہنشاہ جانتے ہیں کہ راہل معافی نہیں مانگیں گے: پون کھیڑا

بی جے پی راہل گاندھی سے لندن میں اپنی تقریر پر معافی مانگنے کے مطالبے پر بضد ہے۔ صبح ہی میڈیا سے خطاب کرتے ہوئے بی جے پی نے راہل گاندھی کا موازنہ میر جعفر سے کر دیا۔

<div class="paragraphs"><p>پون کھیڑا / ویڈیو گریب / یو ٹیوب </p></div>

پون کھیڑا / ویڈیو گریب / یو ٹیوب

user

قومی آوازبیورو

بی جے پی کے قومی ترجمان سمبت پاترا کے بیان کے بعد اب کانگریس نے شدید جوابی حملہ کیا ہے۔ پاترا نے صبح کہا تھا کہ راہل گاندھی کو معافی مانگنی پڑے گی، ہم اسے کروا کر رہیں گے۔ اس کے جواب میں کانگریس کے ترجمان پون کھیڑا نے کہا ہے کہ شاہ اور شہنشاہ جانتے ہیں کہ راہل گاندھی معافی نہیں مانگیں گے۔ اس کے بعد بھی بی جے پی کے ترجمان بغیر نہائے آگئے۔ 

کھیڑا نے مزید کہا، جو لوگ 9 بار ناک رگڑ کر انگریزوں سے معافی مانگتے ہیں اور وائسرائے سے پنشن لیتے ہیں وہ کانگریس کو حب الوطنی کا درس دیتے ہیں تو ہنسی آتی ہے۔ حکومت پر تنقید ملک پر تنقید نہیں ہے۔ آپ جمہوریت کے کرائے دار ہیں مالک نہیں، مالک عوام ہیں۔

کانگریس کے ترجمان نے کہا، "یہ ڈرامہ اس لیے ہو رہا ہے کہ راہل گاندھی وزیر اعظم کے دوست کے بارے میں سوال کر رہے ہیں۔ انہیں ڈر ہے کہ راہل گاندھی وزیر اعظم کے سامنے اڈانی کا ذکر نہ کر دیں۔ جمہوریت کے جے چند نہ بنئے، ہندوستانی تاریخ آپ کو جے چند کہے گی اگر آپ ملک کی بجائے دوست کی فکر کریں گے۔ 


واضح رہے بی جے پی ترجمان سمبت پاترا نے پہلے راہل گاندھی کا موازنہ میر جعفر سے کیا تھا۔ پاترا نے کہا تھا، "میر جعفر کو معافی مانگنی پڑے گی۔ راہل گاندھی آج کی سیاست کے میر جعفر ہیں۔ میر جعفر نے نواب بننے کے لیے کیا کیا اور راہل گاندھی نے لندن میں کیا کیا... بالکل وہی ہے۔" نواب بننا چاہتا ہے، آج کے میر جعفر کو معافی مانگنی پڑے گی، شہزادہ یہ نہیں چلے گا۔ شہزادہ نواب بننا چاہتا ہے، اس کے لیے بیرونی طاقتوں سے مدد مانگ رہا ہے۔" 

پاترا کے اس بیان پر پون کھیڑا نے کہا کہ راہل گاندھی کو میر جعفر کہنے پر پاترا کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔ نیوز پورٹل اے بی پی پر شائع خبر کے مطابق کانگریس کی حکومت والی ریاست میں سمبت پاترا کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کی تیاریاں جاری ہیں۔ پورٹل پر یہ خبر ذرائع کے حوالوں سے شائع کی گئی ہے۔

Follow us: Facebook, Twitter, Google News

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


;