آر بی آئی بورڈ نے مرکزی حکومت کو 99122 کروڑ روپے ٹرانسفر کرنے کی دی منظوری

نوٹیفکیشن کے مطابق آر بی آئی بورڈ نے میٹنگ میں معیشت پر کووڈ-19 کی دوسری لہر کے قہر کو کم کرنے کے لیے موجودہ معاشی حالت، عالمی اور گھریلو چیلنجز اور حال کی پالیسی پر مبنی ترکیبوں کا بھی تجزیہ کیا۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

تنویر

انڈین ریزرو بینک (آر بی آئی) کے بورڈ نے 31 مارچ 2021 کو ختم 9 مہینے کی آڈٹ مدت کے لیے حکومت کو سَرپلس کی شکل میں 99122 کروڑ روپے کی منتقلی (ٹرانسفر) کو منظوری دی ہے۔ مرکزی حکومت کو سَرپلس ٹرانسفر کرنے کا فیصلہ آر بی آئی کے سنٹرل ڈائریکٹر ڈویژن کی جمعہ کو ویڈیو کانفرنس کے ذریعہ ہوئی میٹنگ میں لیا۔ ایک نوٹیفکیشن کے مطابق آر بی آئی بورڈ نے معیشت پر کووڈ-19 کی دوسری لہر کے قہر کو کم کرنے کے لیے موجودہ معاشی حالت، عالمی اور گھریلو چیلنجز اور حال کی پالیسی پر مبنی ترکیبوں کا بھی تجزیہ کیا۔

ریزرو بینک کے آڈٹ سال کو اپریل-مارچ (پہلے جون-جولائی) میں بدلنے کے ساتھ، بورڈ نے 9 مہینے (جولائی 2020-مارچ 2021) کی مدت کے دوران آر بی آئی کی کارگزاری پر تبادلہ خیال کیا۔ میٹنگ کے دوران گورنر شکتی کانت داس کی صدارت میں بورڈ نے انفیکشن مدت کے لیے ریزرو بینک کی سالانہ رپورٹ اور اکاؤنٹس کو منظوری دی۔ بیان کے مطابق ’’بورڈ نے 31 مارچ 2021 کو ختم 9 مہینے (جولائی 2020-مارچ 2021) کی آڈٹ مدت کے لیے مرکزی حکومت کو سرپلس کی شکل میں 99122 کروڑ روپے کی منتقلی کو منظوری دی جب کہ اچانک جوکھم بفر کو 5.50 فیصد پر بنائے رکھنے کا فیصلہ لیا۔‘‘


میٹنگ میں ڈپٹی گورنر مہیش کمار جین، مائیکل دیو ورَت پاترا، ایم راجیشور راؤ اور ٹی روی شنکر شامل ہوئے۔ سنٹرل بورڈ کے دیگر ڈائریکٹر این چندرشیکھرن، ستیش کے مراٹھے، ایس گرومورتی، ریوتی ایر اور سچن چترویدی بھی میٹنگ میں شامل ہوئے۔ مالی سروس محکمہ کے سکریٹری دیواشیش پانڈا اور معاشی معاملوں کے سکریٹری اجے سیٹھ نے بھی میٹنگ میں حصہ لیا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔