سبھی انتخابی ریاستوں میں 22 جنوری تک ریلیوں اور روڈ شو پر پابندی

الیکشن کمیشن نے ریلیوں اور روڈ شو پر پابندی 22 جنوری تک بڑھا دی ہے، اس دوران سیاسی پارٹیاں اِنڈور جلسہ گاہوں میں نصف صلاحیت یا زیادہ سے زیادہ 300 لوگوں کی موجودگی میں جلسہ کر سکیں گے۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

اتر پردیش سمیت پانچ ریاستوں میں ہونے والے اسمبلی انتخابات کے درمیان ملک میں تیزی سے بڑھ رہے کورونا کے معاملوں کو دیکھتے ہوئے انتخابی کمیشن نے بڑا فیصلہ لیا ہے۔ انتخابی کمیشن نے ان پانچوں انتخابی ریاستوں میں انتخابی ریلیوں، جلسوں، روڈ شو پر 15 جنوری تک پابندی کے حکم کو بڑھا دیا ہے۔ اب یہ پابندی 22 جنوری تک رہے گی۔

حالانکہ انتخابی کمیشن نے سیاسی پارٹیوں کو ایک بڑی راحت دیتے ہوئے زیادہ سے زیادہ 300 افراد یا جلسہ گاہ کی صلاحیت کے 50 فیصد افراد کی موجودگی کے ساتھ جلسہ کرنے کی اجازت دے دی ہے۔ انتخابی کمیشن 22 جنوری کو ایک بار پھر حالات کا جائزہ لے گا اور آگے کا فیصلہ کرے گا۔ تب تک سیاسی پارٹیوں کو ڈیجیٹل تشہیر کرنی ہوگی۔ واضح رہ کہ 10 فروری کو پہلے مرحلہ کے لیے ووٹنگ ہونی ہے۔


اس سے قبل الیکشن کمیشن نے 15 جنوری تک ریلیوں اور روڈ شو پر پابندی عائد کی تھی۔ انتخابی کمیشن نے سیاسی پارٹیوں کو کووڈ گائیڈلائنس پر عمل کرنے کے لیے پھر سے آگاہ کیا ہے۔ کمیشن نے افسران کو کووڈ پروٹوکول کے مدنظر سبھی سیاسی پارٹیوں کی سرگرمیوں پر گہری نگاہ رکھنے کی تاکید کی ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔