راج ناتھ سنگھ نے پرائیوٹ شعبے کو ٹیکنالوجی سے لیس کرنے کی ضرورت پر دیا زور

وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ نے پیرکے روز ڈیفنس ریسرچ اینڈ ڈیولپمنٹ آرگنائزیشن (ڈی آر ڈی او) کے نوجوان سائنسدانوں کو’ڈیر ٹو ڈریم 2.0 ایوارڈز‘ کے موقع پر منعقدہ پروگرام سے خطاب کیا۔

راج ناتھ سنگھ، تصویر یو این آئی
راج ناتھ سنگھ، تصویر یو این آئی
user

یو این آئی

نئی دہلی: وزیردفاع راج ناتھ سنگھ نے دفاعی شعبے میں خود انحصاری کے لیے نجی شعبے کی حصہ داری پر زور دیتے ہوئے آج کہا کہ صنعتی شعبے کو ٹیکنالوجی کے میدان میں اتنا مضبوط بنانے کی ضرورت ہے کہ اسے ٹیکنالوجی کی منتقلی کے لیے کسی پر انحصار نہ کرنا پڑے۔

راج ناتھ سنگھ نے پیرکے روز یہاں ڈیفنس ریسرچ اینڈ ڈیولپمنٹ آرگنائزیشن (ڈی آر ڈی او) کے نوجوان سائنسدانوں کو’ڈیر ٹو ڈریم 2.0 ایوارڈز‘ کے موقع پر منعقدہ پروگرام میں اپنے خطاب میں کہا کہ عالمی سلامتی کے چیلنجز، سرحدی تنازعات اور سمندری معاملات کی بڑھتی ہوئی اہمیت کی وجہ سے دنیا بھر کے ممالک فوجی جدید کاری پر توجہ دے رہے ہیں اور فوجی ساز و سامان کی مانگ تیزی سے بڑھ رہی ہے۔ اس بات کو ذہن میں رکھتے ہوئے پرائیوٹ شعبے کو مضبوط بنانے، ضروری سہولیات سے لیس کرنے اور نئے کردار کے لیے تیار کرنا ہوگا۔ اب تک دفاعی شعبے میں پرائیوٹ کمپنیوں کی شرکتداری کم رہی ہے اور سرمایہ اور ٹیکنالوجی اس کی اہم وجوہات ہیں۔


انہوں نے کہا کہ نئے ہندوستان کے بدلتے ہوئے پہلوؤں میں نینو ٹیکنالوجی، کوانٹم کمپیوٹنگ، مصنوعی ذہانت اور روبوٹک ٹیکنالوجی کے شعبے میں کام کیا جا رہا ہے۔ دوہری استعمال کی ٹیکنالوجی کی ترقی پر زور دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس کی بڑے پیمانے پر ضرورت ہے کیونکہ اس سے یہاں ایک طرف ہماری فوج مضبوط ہوگی اور دوسری طرف لوگوں کی زندگی کا میعار بھی بہتر بنے گا۔

انہوں نے کہا کہ ’’آج دوہری استعمال کی ٹیکنالوجی تیار کرنے کی بھی ضرورت ہے، جس سے بڑے پیمانے پر فوجی اور سویلین دونوں اس سے فائدہ اٹھا سکیں۔ ہمیں اپنی مسلح افواج کو جدید ترین آلات فراہم کرنے کے لیے تحقیق و ترقی پر توجہ دینی ہوگی۔


ملک میں مختلف موسمی حالات اور جغرافیائی محل وقوع کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہا ’’یہاں درجہ حرارت ایک طرف ہمالیہ میں صفرسے نیچے گر جاتا ہے، وہیں ریگستان میں درجہ حرارت 50 ڈگری سینٹی گریڈ سے اوپر پہنچ جاتا ہے۔ آج جس طرح ڈی آر ڈی او سے انڈسٹری میں ٹیکنالوجی کی منتقلی کی بات ہو رہی ہے، آنے والے وقت میں ہماری کوشش ہونی چاہیے کہ ہماری انڈسٹری کو اس کی ضرورت نہ پڑے۔ ہماری صنعت ان شعبوں میں اتنا آگے بڑھ کر کام کرے، تاکہ مستقبل میں ہمیں انڈسٹری کا تعاون ملے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔