پنجاب: کسان تحریک پر وزیر اعلیٰ چنی کا اہم اعلان، دھرنے سے متعلق مقدمات واپس ہوں گے

چرنجیت سنگھ چنی نے اعلان کیا ہے کہ ریلوے ٹریک پر دھرنے کے تعلق سے کسانوں کے خلاف جو مقدمات درج کئے گئے ہیں انہیں واپس لیا جائے گا، انہوں نے اس حوالہ سے آر پی ایف کے چیئرمین کو خط بھی ارسال کر دیا ہے

چرنجیت سنگھ چنی / سوشل میڈیا
چرنجیت سنگھ چنی / سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

چنڈی گڑھ: پنجاب کے وزیر اعلیٰ چرنجیت سنگھ چنی نے ہفتہ کے روز اعلان کیا ہے کہ کسان تحریک کے دوران ریلوے ٹریک پر دھرنا دینے والوں کے خلاف وہ تمام مقدمات واپس لئے جائیں گے جو آر پی ایف نے درج کئے ہیں۔ چنی نے اس حوالہ سے آر پی ایف کے چیئرمین کو خط بھی ارسال کیا ہے اور کہا ہے کہ ان مقدمات کو جلد از جلد واپس لیا جائے۔ یہ تمام مقدمات زرعی قوانین پر مرکزی حکومت کے خلاف احتجاجی مظاہروں کے دوران درج ہوئے تھے۔

وزیر اعلیٰ چرنجیت سنگھ چنی نے اس کے علاوہ وبا کے سبب والدین کو کھو چکی لڑکیوں کے لئے آشیرواد اسکیم سے انکم کی حد ہٹانے کا اعلان کیا ہے۔ اس کے ساتھ پنجاب میں سرکاری ملازمتوں میں منتخب ہونے والے ملازمین کے لیے یکم جنوری 2004 سے فیملی پنشن اسکیم کو بھی منظوری دی گئی ہے۔


اس سے قبل وزیر اعلیٰ بننے کے بعد چنی نے اعلان کیا تھا کہ وہ کسانوں کے بجلی کے بل معاف کر دیں گے۔ وعدے کے مطابق، کابینہ کے پہلے اجلاس میں چنی نے 2 کلو واٹ تک بجلی کا بل معاف کرنے کا اعلان کیا۔ چنی نے کہا پنجاب میں 2 کلو واٹ کنکشن رکھنے والوں کا بقایہ بجلی کا بل معاف کیا جائے گا۔ اس کے علاوہ جن کا کنکشن منقطع ہو چکا ہے ان کا کنکشن بھی بحال ہو جائے گا۔ اس سے 53 لاکھ خاندانوں کو فائدہ ہوگا۔

وزیر اعلیٰ چنی نے اپنی پہلی کانفرنس میں کہا تھا ’’پنجاب حکومت کسانوں کے ساتھ ہے۔ ہم پنجاب کے کسان کو کمزور نہیں ہونے دیں گے۔ میں کسانوں کے لیے کچھ بھی کرنے کو تیار ہوں۔ اگر کسانوں پر کوئی آنچ آئی تو میں اپنی گردن بھی کٹوا سکتا ہوں۔ میں اپنا سب کچھ قربان کرنے کے لیے تیار ہوں۔ مرکزی حکومت کو زرعی قوانین کو واپس لینا ہوگا۔‘‘

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔