بہار: ’حکمراں جماعت سے وابستہ عوامی نمائندگان ہی احکامات کی خلاف ورزی میں مصروف‘

للن کمار نے کہا کہ ایک طرف حکومت کوٹا میں پھنسے طلبا کو لانے سے منع کرتی ہے، وہیں دوسری طرف این ڈی اے کے ممبرپارلیمنٹ حکومت کے احکامات کی خلاف ورزی کر رہے ہیں۔ بہار میں دو قانون کیسے چلائے جا رہے ہیں؟

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

پٹنہ: بہار کے ہسوا سے رکن اسمبلی انیل کمار کو جاری سفری پاس نوادہ کے سب ڈویژن آفیسر کو معطل کیے جانے کے باوجود حزب اختلاف اس معاملے میں حکومت پر حملہ آور ہے۔ کانگریس نے کہا کہ قومی جمہوری اتحاد (این ڈی اے) کے لیڈران لاک ڈاؤن کی مسلسل خلاف ورزی کر رہے ہیں۔ کانگریس کا کہنا ہے کہ اس طرح کے معاملہ میں وزیر اعلیٰ کو ضابطہ کے مطابق کارروائی کرنے کا حکم دینا چاہئے۔

بہار پردیش یوتھ کانگریس کے سابق صدر للن کمار نے بدھ کے روز کہا، ’’بی جے پی کے ایم ایل اے انیل سنگھ اپنی بیٹی کو کوٹا سے واپس لے آئے۔ پورنیا سے جے ڈی (یو) کے رکن پارلیمنٹ سنتوش کشواہا دہلی سے اپنی کار میں پورنیا پہنچ گئے اور ارریہ کے رکن پارلیمنٹ پردیپ سنگھ بھی لاک ڈاؤن کے دوران دہلی سے ارریہ پہنچے اور لوگوں میں امدادی سامان تقسیم کیا۔‘‘

للن کمار نے کہا کہ ’’ایک طرف حکومت کوٹا میں پھنسے طلبا کو لانے سے منع کرتی ہے، وہیں دوسری طرف این ڈی اے کے ممبر پارلیمنٹ کھلے عام حکومت کے احکامات کی خلاف ورزی کر رہے ہیں۔ بہار میں دو قانون کیسے چلائے جا رہے ہیں؟‘‘

یوتھ کانگریس کے رہنما نے بہار کے این ڈی اے رہنماؤں کی طرف سے احکامات کی خلاف ورزی کو حکومت کی ساکھ خراب ہونا بتایا۔ انہوں نے کہا کہ عوامی نمائندوں کی ایسی حرکتیں حکومت کی ساکھ پر سوال کھڑے کرتی ہیں۔ حکومت کبھی بھی دوہرے اصول نہیں بناتی۔

Published: 22 Apr 2020, 9:40 PM
next