پنجاب میں 2022 کے اسمبلی انتخابات کی تیاریاں، مدھیہ پردیش سے لائی جارہی مشینیں

چیف الیکٹورل آفیسر نے کہا کہ ان مشینوں کی چیکنگ (ایف ایل سی) مقررہ وقت میں ایس او پیز کے مطابق تسلیم شدہ قومی اور سیاسی جماعتوں کے نمائندوں کی موجودگی میں کی جائے گی۔

تصویر آئی اے این ایس
تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

چنڈی گڑھ: پنجاب کے چیف الیکٹورل آفیسر ڈاکٹر کرونا راجو نے کہا ہے کہ مدھیہ پردیش سے وی وی پیٹ اور کنٹرول یونٹس پنجاب کے پٹھان کوٹ، گورداسپور، ترن تارن، کپورتھلہ، جالندھر، لدھیانہ، فیروز پور، مکتسر، مانسہ اور امرتسر میں ای وی ایم۔ وی وی پیٹ محفوظ طریقے سے ضلعی ہیڈ کوارٹر پہنچ گئی ہیں اور باقی ضلع میں یہ مشینیں دو دن کے اندر پہنچ جائیں گی۔

ڈاکٹر کرونا راجو نے کہا کہ ریاست میں پولنگ بوتھ کی تعداد ایک عقلی عمل کے بعد 23211 سے بڑھ کر 24689 ہوگئی ہے۔ انہوں نے کل یہاں نامہ نگاروں کو بتایا کہ کووڈ وبا کی وجہ سے پولنگ بوتھ پر آنے والے ووٹرز کی تعداد 1400 سے کم ہو کر 1200 رہ گئی ہے۔ اس بات کو مدنظر رکھتے ہوئے ریاست بھر میں پولنگ بوتھ کی تعداد بڑھا دی گئی ہے۔


ڈاکٹر راجو نے کہا کہ الیکشن کمیشن نے اگلے سال پنجاب میں ہونے والے اسمبلی انتخابات کے لیے ضروری ای وی ایم کا بندوبست کرنے کی منظوری دے دی ہے۔ مدھیہ پردیش کے مختلف اضلاع سے 10500 کنٹرول یونٹس (سی یو) اور 21100 وی وی پیٹ مشینیں پنجاب کے مختلف اضلاع میں پہنچائی جا رہی ہیں۔ ان مشینوں کی آمد کے ساتھ، پنجاب کے چیف الیکٹورل آفیسر کے دفتر کے پاس 45316 بیلٹ یونٹس (بی یو)، 34942 کنٹرولنگ یونٹس ( سی یو) اور 37576 ویوی پیٹ مشینیں ہوجائیں گی۔

انہوں نے یقین دلایا کہ ان مشینوں کو لاتے وقت الیکشن کمیشن کے مقرر کردہ ایس او پیز پر عمل کیا جا رہا ہے۔ ضلع وار نوڈل آفیسر ان مشینوں کو مدھیہ پردیش سے جی پی ایس فٹ کئے ہوئے خصوصی ٹرانسپورٹ کنٹینرز میں مناسب اسکیننگ کے بعد سخت سیکورٹی کے درمیان لایا جا رہا۔


چیف الیکٹورل آفیسر نے کہا کہ ان مشینوں کی چیکنگ (ایف ایل سی) مقررہ وقت میں ایس او پیز کے مطابق تسلیم شدہ قومی اور سیاسی جماعتوں کے نمائندوں کی موجودگی میں کی جائے گی۔ ریاست بھر میں ویئر ہاؤس قائم کیے گئے ہیں جن میں سی سی ٹی وی کیمروں کی تنصیب کے ساتھ کثیر سطح کے سیکورٹی انتظامات کیے گئے ہیں۔ کووڈ وبا کو دیکھتے ہوئے احتیاطی تدابیر پر بھی سختی سے عمل درآمد کیا جا رہا ہے۔ ریاست میں ہموار، شفاف، پرامن پولنگ کے لیے ہر ممکن کوشش کی جا رہی ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔