ریزرو بینک کی دو جدید سہولیات کا پی ایم مودی کے ہاتھوں افتتاح

پی ایم مودی نے ویڈیو کانفرنس کے ذریعے ان اسکیموں کا افتتاح کیا، اس پروگرام میں وزیر خزانہ نرملا سیتارمن اور آر بی آئی کے گورنر شکتی کانت داس بھی موجود تھے۔

پی ایم مودی، تصویر بشکریہ پی آئی بی
پی ایم مودی، تصویر بشکریہ پی آئی بی
user

یو این آئی

نئی دہلی: وزیر اعظم نریندر مودی نے جمعہ کو ریزرو بینک آف انڈیا کی دو اختراعی سہولیات کا افتتاح کیا، جن میں ایک سہولت سے عام آدمی بھی مرکزی بینک سے براہ راست سرکاری بانڈ خرید کر اس میں اپنا پیسہ لگا سکے گا۔ اس سہولت کو آر بی آئی کی ریٹیل ڈائریکٹ اسکیم کا نام دیا گیا ہے۔ دوسری سہولت پورے ملک کے لیے آر بی آئی کی مربوط محتسب اسکیم ہے۔ اس کے تحت صارفین کہیں سے ایک ہی مقام پر ڈیجیٹل میڈیم کے ذریعے بینکنگ خدمات سے متعلق اپنی شکایات درج کرا سکیں گے۔

پی ایم مودی نے ویڈیو کانفرنس کے ذریعے ان اسکیموں کا افتتاح کیا۔ اس پروگرام میں وزیر خزانہ نرملا سیتارمن اور آر بی آئی کے گورنر شکتی کانت داس بھی موجود تھے۔ سیتارمن نے اس موقع پر کہا کہ آر بی آئی کی خوردہ سہولت سرکاری بانڈ کی مارکیٹ کو وسعت دے گی۔


آر بی آئی ریٹیل ڈائریکٹ اسکیم کا مقصد سرکاری سیکیورٹیز مارکیٹ تک خوردہ سرمایہ کاروں کی رسائی کو بڑھانا ہے۔ اس کے تحت خوردہ سرمایہ کاروں کے لیے مرکزی حکومت اور ریاستی حکومتوں کی جانب سے جاری کردہ سیکیورٹیز میں براہ راست سرمایہ کاری کرنے کا راستہ کھل جائے گا۔ سرمایہ کار آر بی آئی کے حوالے سے آن لائن گورنمنٹ سیکیورٹیز اکاؤنٹس آسانی سے کھول سکتے ہیں اور ان سیکیورٹیز کو برقرار رکھ سکتے ہیں۔ یہ سروس مفت ہوگی۔

آربی آئی-مربوط محتسب اسکیم کا مقصد شکایات کے ازالے کے نظام میں مزید اصلاحات لانا ہے تاکہ اداروں کے خلاف صارفین کی شکایات کو دور کرنے کے لیے آربی آئی ضوابط وضع کر سکے۔ اس اسکیم کا مرکزی موضوع ’ایک راشٹر-ایک لوک پال‘ کے تصور پر مبنی ہے۔ اس کے تحت ایک پورٹل، ایک ای میل اور ایک پتہ ہوگا جہاں صارفین اپنی شکایات درج کر سکتے ہیں۔ صارفین اپنی شکایات ایک ہی مقام پر دے سکتے ہیں، دستاویزات جمع کر سکتے ہیں، اپنی شکایات/دستاویزات کی حیثیت چیک کر سکتے ہیں اور فیڈ بیک دے سکتے ہیں۔ ایک کثیر لسانی ٹول فری نمبر بھی فراہم کیا جائے گا، جو شکایات کے ازالے اور شکایات درج کرنے سے متعلق تمام ضروری معلومات فراہم کرے گا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔