’جیب کترہ تنہا نہیں آتا، تین لوگ ساتھ آتے ہیں‘، راجستھان میں راہل گاندھی کا مودی، اڈانی، شاہ پر زوردار حملہ

راہل گاندھی نے راجستھان میں پی ایم مودی، صنعت کار اڈانی اور وزیر داخلہ امت شاہ پر سخت حملہ کرتے ہوئے کہا کہ ’’پی ایم مودی دھیان بھٹکاتے ہیں، اڈانی جیب کاٹتے ہیں اور امت شاہ لاٹھی چلاتے ہیں۔‘‘

<div class="paragraphs"><p>راہل گاندھی، تصویر @INCIndia</p></div>

راہل گاندھی، تصویر @INCIndia

user

قومی آوازبیورو

راجستھان اسمبلی انتخاب کے پیش نظر آج راہل گاندھی نے ریاست کے کچھ اہم علاقوں میں انتخابی تشہیر کا عمل انجام دیا۔ اس دوران راہل گاندھی نے وزیر اعظم نریندر مودی، صنعت کار گوتم اڈانی اور وزیر داخلہ امت شاہ پر زوردار انداز میں حملہ کیا۔ انھوں نے جیب کتروں کی مثال پیش کرتے ہوئے کہا کہ ’’جیب کترہ کبھی تنہا نہیں آتا۔ تین لوگ ساتھ میں آتے ہیں۔ ایک دھیان بھٹکاتا ہے، دوسرا بلیڈ سے جیب کاٹتا ہے اور تیسرا دھمکاتا ہے۔‘‘ پھر وہ کہتے ہیں ’’پی ایم مودی ٹی وی پر آ کر ہندو-مسلم، نوٹ بندی، جی ایس ٹی بول کر لوگوں کا دھیان بھٹکاتے ہیں۔ پھر اڈانی لوگوں کی جیب کاٹنے کا کام کرتے ہیں، اور امت شاہ لاٹھی چلاتے ہیں، یعنی دھمکاتے ہیں۔‘‘

کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے آج دھولپور اور بھرت میں انتخابی جلسوں کے دوران عوام سے ایک بار پھر کانگریس کو برسراقتدار کرنے کی اپیل کی اور مرکز کی مودی حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا۔ انھوں نے کہا کہ ’’پہلے جو پیسہ ملک کی سرحد پر کھڑے جوانوں کی حفاظت میں خرچ ہوتے تھے، وہ اب اڈانی کو دیا جا رہا ہے۔ ساتھ ہی اس حکومت نے اگنی ویر منصوبہ کو نافذ کر ملک کے نوجوانوں کا خواب توڑنے کا کام کیا ہے۔‘‘


نوجوانوں میں فوجی جوان بننے کی خواہش کا تذکرہ کرتے ہوئے راہل گاندھی نے کہا کہ ’’نوجوان صبح اٹھ کر ورزش کرتے ہیں کیونکہ انھیں فوج میں بھرتی ہو کر ملک کی حفاظت کرنی ہے۔ پہلے کوئی بھی فوج کا افسر سرحد پر کھڑا ہوتا تھا تو حکومت ہند اسے گارنٹی دیتی تھی کہ آپ شہید ہوئے تو آپ کے کنبہ کی ہم حفاظت کریں گے، لیکن اب مودی نے اگنی ویر منصوبہ نافذ کر دیا ہے۔ اب بولا جاتا ہے کہ آپ شہید ہوئے تو آپ جانو، آپ کا کام جانے۔ ہم کچھ نہیں دینے والے۔‘‘ اپنی بات کو آگے بڑھاتے ہوئے راہل کہتے ہیں کہ ’’پہلے جو پیسے جوانوں کی حفاظت میں خرچ ہوتے تھے، وہ اب اڈانی کو دیے جا رہے ہیں۔ اڈانی جہاں سے، جو بھی اسلحہ، جس کسی بھی ملک سے خریدنا چاہیں خرید سکتے ہیں۔ اگنی ویر منصوبہ نافذ کر کے اس حکومت نے ہمارے نوجوانوں کا خواب توڑنے کا کام کیا ہے۔‘‘

اپنے خطاب کے دوران راہل گاندھی نے ذات پر مبنی مردم شماری اور کانگریس کی گارنٹیوں کا بھی تذکرہ کیا۔ انھوں نے کہا کہ ’’اگر ہماری حکومت آئے گی تو پہلا کام ذات پر مبنی مردم شماری کا ہوگا۔ پسماندہ طبقات کی جتنی آبادی ہوگی، انھیں اتنی ہی شراکت داری ملے گی۔ ہم دو ہندوستان نہیں چاہتے ہیں۔ اس کو بدلنے کا سب سے بڑا قدم ذات پر مبنی مردم شماری ہے۔‘‘ کانگریس کی گارنٹی کے بارے میں انھوں نے کہا کہ ’’مودی (حکومت) نے 1200 کا سلنڈر کر رکھا ہے، ہم حکومت آنے پر 400 روپے کا کر دیں گے۔ انتخاب کے بعد 25 لاکھ روپے کی جگہ 50 لاکھ روپے تک کا علاج مفت ہوگا۔ ہم نے انگریزی اسکول کا جال بچھا دیا ہے، ایسے میں اب ہم چاہتے ہیں کہ راجستھان کی ہر بیٹی ہندی، انگریزی سیکھے۔‘‘ وہ مزید کہتے ہیں کہ ’’شاہ، گڈکری کے بیٹے انگریزی اسکول میں پڑھتے ہیں اور ہمیں کہتے ہیں انگریزی مت پڑو۔ اگر راجستھان میں بی جے پی کی حکومت آئی تو او پی ایس، سستا سلنڈر، خواتین کے اکاؤنٹ میں پیسہ، مفت صحت منصوبہ... سب کچھ بند کر دے گی۔ اس لیے آپ طے کرو کہ آپ کسے منتخب کرنا چاہتے ہیں!‘‘

Follow us: Facebook, Twitter, Google News

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


/* */