مسلسل نویں روز پٹرول-ڈیزل کی قیمتوں میں اضافہ سے عوام حیران و پریشان

ملک کی سب سے بڑی آئل مارکیٹنگ کمپنی انڈین آئل کارپوریشن کے مطابق قومی دارالحکومت دہلی میں پٹرول کی قیمت آج 48 پیسے بڑھ کر 76.26 روپے فی لیٹر ہوگئی ، جو21 نومبر 2018 کے بعد کی بلند ترین سطح پر ہے۔

سوشل میڈیا
سوشل میڈیا
user

یو این آئی

نئی دہلی : آئل مارکیٹنگ کمپنیوں کی جانب سے آج مسلسل نویں روز قیمتوں میں زبردست اضافے کی وجہ سے پٹرول کی قیمت تقریبا19 مہینے اور ڈیزل کی قیمت تقریبا 20 مہینے کی بلندترین سطح پر پہنچ گئی ہیں۔ لگاتار ہو رہے اضافہ کی وجہ سے عوام حیران و پریشان ہیں، کیونکہ کورونا وبا کی وجہ سے پہلے ہی ان کو کئی طرح کے مسائل کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے اور تیل کی قیمتوں میں اضافہ کے سبب مہنگائی بھی بڑھ رہی ہے۔

ملک کی سب سے بڑی آئل مارکیٹنگ کمپنی انڈین آئل کارپوریشن کے مطابق قومی دارالحکومت دہلی میں پٹرول کی قیمت آج 48 پیسے بڑھ کر 76.26 روپے فی لیٹر ہوگئی ، جو21 نومبر 2018 کے بعد کی بلند ترین سطح پر ہے۔ ڈیزل کی قیمت بھی 59 پیسے بڑھنے کے ساتھ 74.62 روپے فی لیٹر ہوگئی ، جو 26 اکتوبر 2018 کے بعد کی بلند ترین سطح پرہے۔

ملک میں پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں 07 جون سے اضافہ ہو رہا ہے۔ ان آٹھ دنوں میں دہلی میں پٹرول پانچ روپے یعنی سات فیصد اور ڈیزل 5.23 روپے یا ساڑھے سات فیصد مہنگا ہو چکا ہے۔ کولکاتا میں پٹرول کی قیمت 46 پیسے بڑھ کر 78.10 روپے ، ممبئی میں 47 پیسے بڑھ کر 83.17 روپے اور چنئی میں 43 پیسے بڑھ کر 79.96 روپے فی لیٹر ہوگئی۔ ڈیزل کولکاتا میں 53 پیسے مہنگا ہوکر 70.33 روپے ، ممبئی میں 57 پیسے مہنگا ہو کر 73.21 روپے اور چنئی میں 51 پیسے مہنگا ہو کر 72.69 روپے فی لیٹر فروخت ہوا۔

next