وقت سے 2 دن قبل ملتوی ہو گئی پارلیمنٹ کی کارروائی، حکومت مہنگائی پر بحث کو تیا ر نہیں!

کانگریس لیڈر ششی تھرور نے کہا کہ پارلیمانی اجلاس کو دو دن پہلے ملتوی کرنے کی جگہ حکومت کو ایندھن کی قیمتوں میں اضافہ اور مہنگائی پر ایک سنجیدہ بحث سننے کی ہمت کرنی چاہیے تھی۔

پارلیمنٹ، تصویر آئی اے این ایس
پارلیمنٹ، تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

ہندوستان میں چاروں طرف مہنگائی سے تباہی کا عالم ہے۔ اس کے باوجود پارلیمنٹ میں حکومت مہنگائی پر بحث کرنے کے لیے تیار نہیں ہے۔ پارلیمنٹ کو دو دن پہلے ہی ملتوی کر دیا گیا ہے، جب کہ اپوزیشن لگاتار پارلیمنٹ میں مہنگائی پر بحث کا مطالبہ کرتا رہا۔ پارلیمنٹ ملتوی ہونے سے پہلے آج بھی اپوزیشن حکومت پر ایندھن کی قیمتوں کو لے کر حملہ آور نظر آئی۔

لوک سبھا میں ترنمول کانگریس لیڈر سدیپ بندوپادھیائے نے کہا کہ پٹرول، ڈیزل اور گھریلو گیس کی قیمتیں جس طرح بڑھ رہی ہیں، اس پر لگام لگایا جانا چاہیے۔ پارلیمنٹ چل رہی ہے، لیکن اس سلسلے میں کوئی بحث نہیں ہو رہی ہے، اس سے زیادہ افسوس کی بات کیا ہو سکتی ہے۔ ہم لوگوں نے کئی بار کہا ہے کہ اس ایشو پر بحث کرائی جائے، لیکن وہ تیار نہیں ہوئے۔


سدیپ بندوپادھیائے نے مزید کہا کہ مجھے ڈر ہے کہ پوری دنیا میں ہمارے ملک کی جو پٹرول-ڈیزل کی قیمت ہے، وہ ایک نمبر پر پہنچ گئی ہے۔ حکومت کے وزیر آ کر بیان بھی نہیں دیتے ہیں، اس سے زیادہ افسوس کی بات پارلیمانی جمہوریت میں کچھ نہیں ہو سکتی ہے۔

کانگریس لیڈر ششی تھرور نے کہا کہ پارلیمانی اجلاس کو دو دن پہلے ملتوی کرنے کی جگہ حکومت کو ایندھن کی قیمتوں میں اضافہ اور مہنگائی پر ایک سنجیدہ بحث سننے کی ہمت کرنی چاہیے تھی۔ یہ واضح ہے کہ حکومت ہند کسی بھی حال میں ایندھن کی بڑھتی قیمتوں اور مہنگائی پر بحث نہیں کرنا چاہتی۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔