کورونا متاثرین کی کم تعداد کو ہی اسپتالوں میں داخل ہونا پڑ رہا ہے: کیجریوال

دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال نے کہا کہ اب دہلی میں کورونا سے متاثرہ مریضوں کی کم تعداد کو ہی اسپتالوں میں داخل کروانے کی ضرورت پڑ رہی ہے اور زیادہ تر مریض گھروں میں ہی رہ کر صحت مند ہو رہے ہیں۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

نئی دہلی: دہلی کے وزیر اعلی کیجریوال نے اتوار کے روز کہا کہ زیادہ مریضوں کا گھر پر ہی بہتر علاج ہو جانے کے سبب کورونا مریضوں کی کم تعداد کو ہی اسپتالوں میں داخل ہونے کی ضرورت پڑ رہی ہے۔ اروند کیجریوال نے دلی میں کورونا سے ٹھیک ہونے والے مریضوں کی تعداد میں اضافے پر کہا ’’دہلی کے دو کروڑ لوگوں کی محنت رنگ لا رہی ہے۔ دہلی کا ری کوری ریٹ 70 فیصد سے زیادہ ہونے پر سبھی کورونا واریئرز کو مبارکباد۔ کورونا کو شکست دینے کے لئے ابھی ہم سب کو زیادہ محنت کرنی ہے‘‘۔

انہوں نے کہا کہ ’’اب دہلی کے کورونا سے متاثرہ مریضوں کی کم تعداد کو ہی اسپتالوں میں داخل کروانے کی ضرورت پڑ رہی ہے اور زیادہ ترمریض گھر میں ہی رہ کر صحت مند ہو رہے ہیں۔ گزشتہ ہفتے تقریباً 2300 کورونا مریض سامنے آئے۔ اسپتالوں میں داخل مریضوں کی تعداد 6200 سے کم ہوکر 5300 رہ گئی ہے۔ جبکہ آج 9300 بیڈز خالی ہیں‘‘۔

کورونا کا سامنا کر رہی راجدھانی کے لئے ہفتہ کے روز راحت کی بات یہ رہی کہ نئے مریضوں کے مقاملے ٹھیک ہونے والوں کی تعداد زیادہ رہی۔ دہلی حکومت کی وزارت صحت کے اعداد و شمار کے مطابق ہفتہ کے روز 2505 نئے معاملوں سے متاثرین کی مجموعی تعداد 97 ہزار 200 ہوگئی ہے۔

اس دوران یہ بات باعث راحت رہی کہ نئے معاملات کے مقابلے، کورونا کو شکست دینے والوں کی تعداد 2632 زیادہ رہی اور اب تک 68 ہزار 256 افراد اس انفیکشن کو شکست دے چکے ہیں۔ اس دوران کورونا سے مرنے والوں کی تعداد میں 81 کا اضافہ ہوا اور اموات کی مجموعی تعداد 3004 سے تجاوز کر گئی۔ ابھی تک دہلی میں 23 جون کو ایک دن میں سب سے زیادہ 3947 معاملے آئے تھے۔

next