فیزکس کا نوبل ایوارڈ مشترکہ طور پر سیوکورو مانیبے، کلاؤس ہاسیلمین اور جیورجیو پاریسی کے نام

سویڈن کی راجدھانی اسٹاک ہوم واقع رائل سویڈش اکیڈمی آف سائنسز نے سیوکورو مانیبے، کلاؤس ہاسیلمین اور جیورجیو پاریسی کو فیزکس میں مشترکہ طور پر 2021 کا نوبل ایوارڈ دیا۔

تصویر آئی اے این ایس
تصویر آئی اے این ایس
user

تنویر

فیزکس کے لیے سال 2021 کے نوبل ایوارڈ کا اعلان کر دیا گیا ہے۔ رائل سویڈش اکیڈمی آف سائنسز نے سیوکورو مانیبے، کلاؤس ہاسیلمین اور جیورجیو پاریسی کو فیزکس میں مشترکہ طور پر 2021 کا نوبل ایوارڈ دیا ہے۔ تینوں سائنسدانوں کو یہ انعام پیچیدہ فیزکس سسٹم کی ہماری سمجھ میں بے مثال تعاون کے لیے دیا گیا ہے۔

قابل ذکر ہے کہ فیزکس میں نوبل ایوارڈ کا اعلان سویڈن کی راجدھانی اسٹاک ہوم واقع رائل سویڈش اکیڈمی آف سائنسز کے ذریعہ ہی کیا جاتا ہے۔ ابھی تک فیزکس کے شعبہ میں بہترین تعاون کے لیے 216 لوگوں کو نوبل ایوارڈ سے نوازا جا چکا ہے، اور ان میں چار خواتین شامل ہیں۔ 2020 میں فیزکس کا نوبل ایوارڈ مشترکہ طور پر روجر پینروج، رینہارڈ جینجیل اور اینڈریا گیز کو دیا گیا تھا۔


نوبل اسمبلی کے مطابق فیزکس ایوارڈس کا وہ شعبہ تھا جس کا تذکرہ الفریڈ نوبل نے 1895 میں اپنی وصیت میں پہلی بار کیا تھا۔ انھوں نے کہا تھا کہ انیسویں صدی کے آخر میں کئی لوگ فیزکس کو سائنس میں سب سے آگے مانتے تھے اور شاید الفریڈ نوبل نے بھی اسے اسی طرح سے دیکھا۔ ان کی اپنی تحقیق بھی فیزکس سے ہی جڑی ہوئی ہے۔ بہر حال، اس ایوارڈ کو حاصل کرنے والے شخص کو ایک گولڈ میڈل کے ساتھ 1.14 ملین ڈالر نقد میں دیئے جاتے ہیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔