کورونا کی دوسری لہر میں آکسیجن کی کمی سے کوئی موت نہیں ہوئی، مودی حکومت کا راجیہ سبھا میں بیان

کے سی وینوگوپال نے راجیہ سبھا میں آکسیجن کی کمی سے ہونے والی اموات کو لے کر سوال کیا تھا، اس پر وزیر صحت نے جواب دیا کہ کورونا کی دوسری لہر میں آکسیجن کی کمی سے ملک میں کوئی موت نہیں ہوئی۔

علامتی تصویر
علامتی تصویر
user

قومی آوازبیورو

کورونا وبا کی دوسری لہر کے دوران ملک کے کئی حصوں میں آکسیجن کی کمی کے سبب کورونا مریضوں کے تڑپ تڑپ کر مرنے کے کئی معاملے سامنے آئے تھے۔ لیکن مرکز کی مودی حکومت نے آج راجیہ سبھا میں کہا ہے کہ کورونا کی دوسری لہر کے دوران ملک میں آکسیجن کی کمی سے کسی کی موت نہیں ہوئی ہے۔

منگل کے روز کانگریس رکن پارلیمنٹ کے سی وینوگوپال نے راجیہ سبھا میں آکسیجن کی کمی سے ہونے والی اموات کو لے کر سوال کیا تھا۔ اس پر وزیر صحت کی جانب سے جواب دیتے ہوئے بتایا گیا کہ کورونا کی دوسری لہر میں آکسیجن کی کمی کے سبب ملک میں کسی کی موت نہیں ہوئی ہے۔


مودی حکومت نے راجیہ سبھا میں بتایا کہ کورونا سے ہونے والی اموات کی جانکاری مستقل بنیاد پر ریاست اور مرکز کے زیر انتظام خطہ مرکزی وزارت صحت کو دیتے ہیں۔ لیکن کسی بھی ریاست یا مرکز کے زیر انتظام خطہ نے آکسیجن کی کمی سے موت کو لے کر وزارت صحت کو کوئی جانکاری نہیں دی۔

حالانکہ وزارت صحت نے اپنے جواب میں یہ ضرور مانا کہ پہلی لہر کے مقابلے دوسری لہر میں میڈیکل آکسیجن کی طلب کافی بڑھ گئی تھی۔ حکومت کے مطابق پہلی لہر میں جہاں 395 میٹرک ٹن آکسیجن کی طلب تھی، تو وہیں دوسری لہر میں یہی طلب 9000 میٹرک ٹن تک پہنچ گئی تھی۔ حکومت نے کہا کہ دوسری لہر میں مرکز کی جانب سے 28 مئی تک ریاستوں کو 10250 میٹرک ٹن آکسیجن کی سپلائی کی گئی۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔