مختار انصاری 26 مہینوں کے بعد دوبارہ باندہ جیل میں

مختار انصاری کو بیرک نمبر 16 میں رکھا گیا ہے جو 24 گھنٹے کیمروں کی نگرانی میں ہے اور پوری باندہ جیل کی لکھنؤ کے کمانڈ سینٹر روم سے لگاتار اعلی افسران کے ذریعہ مانیٹرنگ کی جا رہی ہے۔

مختار انصاری / تصویر آئی اے این ایس
مختار انصاری / تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

باندہ:: اتر پردیش کے ہائی پروفائل زور آور لیڈر و ایم ایل اے مختار انصاری کو سخت حفاظتی بندوبست کے درمیان بدھ کے روز پنجاب سے لاکر باندہ ضلع جیل میں منتقل کر دیا گیا۔ مختار کی باندہ جیل میں واپسی قانونی رسہ کشی کے بعد سپریم کورٹ کے حکم پر تقریباً ساڑھے 26 مہینے بعد ممکن ہو سکی۔ یوپی پولیس کی اسپیشل سیکورٹی ٹیم کے ذریعہ پنجاب کی روپڑ جیل سے مختار انصاری کو علی الصبح تقریباً 4:50 بجے ضلع جیل باندہ کے گیٹ پر لایا گیا اور تقریباً پانچ بجے انہیں جیل کے اندر داخل کر لیا گیا۔ محکمہ داخلہ نے پریس ریلیز جاری کر یہ معلومات دی۔

مختار کو لانے والی پولیس کی اسپشل ٹیم اور جیل افسران کی موجودگی میں سیکورٹی اہلکار نے سامان کی جانچ کی۔ ساتھ ہی مختار انصاری کی بھی جدید ڈورم فیم میٹل ڈٹکٹر، پول میٹل ڈٹکٹر، ہیڈن ہیلد میٹل ڈٹکٹر وغیرہ آلات کے ذریعہ تلاشی لی گئی جس میں کوئی بھی غیر قانونی سامان برآمد نہیں ہوا۔ میڈیکل کالج باندہ کے ڈاکٹروں کی ٹیم نے مختار کی صحت کا معائنہ کیا اور انہیں صحت مند قرار دیا۔ کورٹ سے متعلقہ دستاویزات کا بھی جائزہ لیا گیا۔ مختار انصاری کی سیکورٹی کے لئے ضلع انتظامیہ نے پختہ انتظامات کیے ہیں۔

مختار انصاری کو بیرک نمبر 16 میں رکھا گیا ہے جو 24 گھنٹے کیمرے کی نگرانی میں ہے۔ پوری جیل سی سی ٹی وی کیمروں سے لیس ہے اور جیل ہیڈکوارٹر لکھنؤ کے کمانڈ سینٹر روم سے اس کی لگاتار مانیٹرنگ اعلی افسران کے ذریعہ کی جا رہی ہے۔ جیل کے باہر کی سیکورٹی کے لئے ڈیڑھ سیکشن پی اے سی کے علاوہ آئی جی رینج کے ذریعہ ایک پلاٹون پی اے سی بھی مہیا کرائی گئی ہے ۔جیل کے انتظامی اور سیکورٹی نظم وضبط کے لئے شہر مجسٹریٹ باندہ کو انچارج سپرنٹنڈنٹ آف جیل بنایا گیا ہے۔

پرمود کمار ترپاٹھی جیلر اور دو ڈپٹی جیل پہلے سے ہی تھے اس کے علاوہ دو نئے ڈپٹی جیلر تعینات کیے گئے ہیں۔ ہیڈ جیل وارڈ اور جیل وارڈ بھی وافر مقدار میں دستیاب کرائے گئے ہیں۔ روپڑ جیل میں مختار انصاری کی کورنا جانچ کیے جانے کی کوئی رپورٹ جیل کو موصول نہیں ہوئی ہے۔ اس لئے جیل انتظامیہکی جانب سے ان کی کورونا جانچ کرائی جائے گی۔ سپریم کورٹ کے ذریعہ دیئے گئے حکم پر عملدرآمد میں ضلع انتظامیہ باندہ اور سی ایم او باندہ کے تعاون سے مختار انصاری کی صحت کا خیال رکھنے کو یقینی بنایا جا رہا ہے۔ ہرصورتحال میں 24 گھنٹے جیل اور مختار انصاری کی سیکورٹی انتظام کو یقینی بنانے کے ہدایات دئیے گئے ہیں۔

سپریم کورٹ کی ہدایت کے بعد پنجاب حکومت مختار انصاری کو اترپردیش پولیس کے حوالے کرنے کے لئے تیار ہوئی تھی جس کے بعد انہیں بذریعہ سڑک یہاں لانے کا فیصلہ کیا تھا۔ اس کے لئے محکمہ داخلہ نے سیکورٹی کا فل پروف پلا ن تیار کیا تھا۔ اور تقریباً 140جوانوں کا ایک دَل جس میں پی اے سی کے جوان بھی شامل تھے پیر کو پنجاب کے لئے روانہ ہوا تھا۔ اس درمیان زورآور لیڈر کی سیکورٹی اور اس کے ساتھ کسی بھی قسم کا ناخوشگوار واقعہ پیش آنے کے تمام قیاس اپوزیشن پارٹیوں اور سوشل میڈیا پر لگائے جانے لگے۔ ان سب سے بے پرواہ سیکورٹی اہلکاروں نے دو دن اور دو رات کے تھکا دینے والے سفر کو طے کرکے مختار کو باندہ جیل پہنچا دیا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔