زرعی قوانین کی واپسی پر کنگنا کے متنازعہ پوسٹ سے سرسا ناراض، اسپتال میں داخل کرنے کا مطالبہ

منجندر سنگھ سرسا نے مرکزی حکومت سے گزارش کی ہے کہ کنگنا رانوت کو دی گئی سیکورٹی واپس لی جائے اور اسپتال میں داخل کیا جائے، کیونکہ انھیں علاج کی سخت ضرورت ہے۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

وزیر اعظم نریندر مودی کے ذریعہ تینوں متنازعہ زرعی قوانین کو واپس لینے کے اعلان کے بعد اداکارہ کنگنا رانوت نے سوشل میڈیا پر قابل اعتراض پوسٹ ڈال دیا۔ اس پر خوب ہنگامہ ہوا، اور اب شرومنی اکالی دل کے لیڈر منجندر سنگھ سرسا نے کنگنا سے سیکورٹی واپس لے کر انھیں اسپتال میں داخل کرنے کا مطالبہ مرکزی حکومت سے کیا ہے۔ ساتھ ہی کنگنا کے بیان پر مقدمہ درج کرانے کی تنبیہ بھی دی گئی ہے۔

دراصل کنگنا نے اپنے سوشل میڈیا پوسٹ میں اندرا گاندھی کی تصویر شیئر کرتے ہوئے ایک بیان جاری کیا۔ اس پر انھوں نے لکھا کہ خالصتانی دہشت گرد آج بھلے ہی حکومت کا ہاتھ مروڑ رہے ہوں، لیکن اس خاتون کو مت بھولنا، واحد خاتون وزیر اعظم نے ان کو اپنی جوتی کے نیچے کچل دیا۔ کنگنا نے یہ بھی لکھا تھا کہ انھوں نے اس ملک کو کتنی بھی تکلیف دی ہو، انھوں نے اپنی جان کی قیمت پر انھیں مچھروں کی طرح کچل دیا، لیکن ملک کے ٹکڑے نہیں ہونے دیے۔ ان کی موت کی دہائیوں کے بعد آج بھی اس کے نام سے کانپتے ہیں یہ، ان کو ویسا ہی گرو چاہیے۔


اس سوشل میڈیا پوسٹ کے بعد منجندر سنگھ سرسا نے کہا کہ مجھے لگتا ہے کہ وہ ذہنی طور سے بیمار ہیں۔ جنھوں نے ایک بار پھر سوشل میڈیا پر کہا ہے کہ وزیر اعظم نے جو قانون واپس لیے ہیں، وہ خالصتانیوں کے آگے جھکے ہیں۔ اتنا ہی نہیں، انھوں نے یہ تک کہا ہے کہ اندرا گاندھی نے ان کو پیروں تلے کچلا تھا۔ یہ بہت ہی گھٹیا بیان ہے۔

منجندر سنگھ سرسا نے مزید کہا کہ ’’حکومت نے کنگنا رانوت کو سیکورٹی دے رکھی ہے۔ میں حکومت سے گزارش کرتا ہوں کہ ان کو سیکورٹی کی نہیں ایک اسپتال کی ضرورت ہے، جہاں ان کا علاج ہو سکے۔ ہم کنگنا کے خلاف مقدمہ درج کرائیں گے اور انھیں جیل تک چھوڑ کر آئیں گے۔‘‘

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔