مہنت نریندر گری کی مشتبہ حالت میں موت، پھانسی کے پھندے سے لٹکی ملی لاش

پولیس کا کہنا ہے کہ مٹھ کے کمرے میں ہی مہنت نریندر گری کی لاش لٹکی ہوئی تھی اور چاروں طرف سے گیٹ بند تھا، پولیس نے شروعاتی جانچ کی بنیاد پر اسے خودکشی کا معاملہ بتایا ہے، لیکن تحقیقات جاری ہے۔

مہنت نریندر گری، تصویر آئی اے این ایس
مہنت نریندر گری، تصویر آئی اے این ایس
user

تنویر

اپنے بیانات کی وجہ سے ہمیشہ سرخیوں میں رہنے والے اکھل بھارتیہ اکھاڑا پریشد کے صدر مہنت نریندر گری کی پیر کے روز مشتبہ حالت میں موت ہوگئی۔ ان کی لاش پریاگ راج واقع ان کے باگھمری مٹھ میں ہی پھانسی کے پھندے سے لٹکتی ہوئی ملی۔ جائے وقوع پر پہنچی پولیس نے تحقیقات شروع کر دی ہے اور فورنسک ٹیم کے ساتھ ساتھ ڈاگ اسکواڈ کو بھی مٹھ بلایا گیا ہے۔ مہنت نریندر گری کے انتقال کی خبر ملنے کے بعد اتر پردیش کے وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ اور سماجوادی پارٹی کے صدر اکھلیش یادو سمیت متعدد سیاسی و سماجی ہستیوں نے اپنے افسوس کا اظہار کیا ہے۔

موصولہ خبروں کے مطابق اکھل بھارتیہ اکھاڑا پرییشد کے صدر مہنت نریندر گری کی موت کے بعد سادھو-سَنتوں میں غم کا ماحول چھا گیا ہے۔ جائے وقوع پر پہنچی پولیس کا کہنا ہے کہ مٹھ کے کمرے میں ہی مہنت نریندر گری کی لاش لٹکی ہوئی تھی اور چاروں طرف سے گیٹ بند تھا۔ پولیس نے شروعاتی جانچ کی بنیاد پر اسے خودکشی کا معاملہ بتایا ہے، لیکن تحقیقات جاری ہے۔


بتایا جا رہا ہے کہ فورنسک ٹیم موقع پر پہنچ چکی ہے اور پولیس کی بڑی تعداد بھی وہاں موجود ہے۔ کچھ ایسی خبریں بھی سامنے آ رہی ہیں جس میں کہا جا رہا ہے کہ مہنت نریندر گری کو کسی سازش کے تحت مارا گیا ہے۔ حالانکہ ابھی کچھ بھی مصدقہ طور پر نہیں کہا جا سکتا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔