لکھنؤ کے ہوٹل لیوانہ میں آتشزدگی کا معاملہ، کئی محکموں کے 17 عہدیدار معطل

لکھنؤ کے ہوٹل لیوانہ آتشزدگی معاملہ میں قصوروار پائے گئے 19 عہدیداروں میں سے دو سبکدوش ہو چکے ہیں، جن افسران پر کارروائی کی گئی ہے وہ مختلف محکموں سے وابستہ ہیں

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

لکھنؤ: اتر پردیش کی راجدھانی لکھنؤ کے ہوٹل لیوانہ آتشزدگی معاملے کی تحقیقاتی رپورٹ سامنے آنے کے بعد ریاستی حکومت نے قصوروار اہلکاروں کے خلاف بڑی کارروائی کرتے ہوئے 17 افسران کو معطل کرنے کا حکم جاری کیا ہے۔ تحقیقاتی رپورٹ میں 6 محکموں کے 19 افسران کو براہ راست قصوروار قرار دیا گیا ہے۔

تحقیقات میں لکھنؤ ڈیولپمنٹ اتھارٹی اور فائر حکام کو غیر قانونی تعمیرات اور حفاظتی معیارات کو نظر انداز کرتے ہوئے ہوٹل وقتاً فوقتاً منظوری اور این او سی جاری کرنے کا مرتکب پایا گیا ہے۔ رپورٹ کے منظر عام پر آنے کے بعد ریاستی حکومت نے ان افسران کو معطل کرنے کا حکم دیا ہے۔


لکھنؤ کے پولس کمشنر ایس بی شروڈکر اور ڈویزنل کمشنر روشن جیکب نے لیوانہ آتشزدگی کے واقعہ پر رپورٹ پیش کی ہے۔ اس معاملے میں قصوروار پائے گئے 19 افسران میں سے دو ریٹائر ہو چکے ہیں۔ جن افسران پر کارروائی کی گئی ہے ان میں سی ایف او (چیف فائر آفیسر)، اس وقت کے ایکسائز آفیسر اور اس وقت کے دیگر افسران شامل ہیں۔

لکھنؤ کے موجودہ سی ایف او وجے کمار سنگھ اور فائر آفیسر یوگیندر پرساد کو بھی معطل کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔ اس کے ساتھ ہی بجلی محکمہ کے تین افسران اسسٹنٹ ڈائریکٹر الیکٹریکل سیفٹی وجے کمار راؤ، انڈر انجینئر آشیش مشرا اور سب ڈویژنل افسر راجیش مشرا کو بھی معطل کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔ ایل ڈی اے میں تعینات اس وقت کے افسر مہندر کمار مشرا کے خلاف بھی کارروائی کی گئی ہے اور انہیں بھی معطل کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔

Follow us: Facebook, Twitter, Google News

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔