ملک کو غمزدہ حالت میں چھوڑ کر وزیر اعظم اور وزیر داخلہ لاپتہ ہیں: سنجے سنگھ

عآپ رکن پارلیمنٹ سنجے سنگھ نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ پورا ملک کورونا سے آہ و بقا کر رہا ہے، لیکن وزیر اعظم نریندر مودی اور وزیر داخلہ امت شاہ عوام سے زیادہ انتخابات کی فکر میں ہیں۔

تصویر بذریعہ پریس ریلیز
تصویر بذریعہ پریس ریلیز
user

قومی آوازبیورو

لکھنؤ: عام آدمی پارٹی کے اتر پردیش انچارج اور راجیہ سبھا ممبر سنجے سنگھ نے کورونا کے خلاف مقابلے پر اترپردیش کی یوگی آدتیہ ناتھ حکومت کے ساتھ ساتھ وزیر اعظم نریندر مودی اور وزیر داخلہ امیت شاہ کو بھی نشانہ بنایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پورا ملک کورونا سے کراہ رہا ہے اور وزیر اعظم اور وزیر داخلہ لوگوں کو افسردہ حالت میں چھوڑ کر غائب ہیں۔ عوام سے زیادہ انتخابات کی فکر ہے۔

سنجے سنگھ یو پی کی صورت حال پر فکر کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ یہاں اسپتالوں میں مریضوں کے لئے کوئی جگہ نہیں ہے۔ ان کے اہل خانہ آکسیجن، بستروں اور دوائیوں کے لیے ٹھوکریں کھا رہے ہیں۔ مریض علاج کے بغیر ہی دم توڑ رہے ہیں، لیکن یوگی حکومت نظام کو بہتر بنانے کی بجائے سچ کو چھپانے کی کوشش کر رہی ہے۔ یوگی حکومت کورونا کے خلاف جنگ میں مکمل طور پر ناکام ہوچکی ہے۔ مرکزی حکومت کو ریاست کے حالات پر فوری مداخلت کرنی چاہئے۔

عآپ رکن پارلیمنٹ آج یہاں پارٹی دفتر میں پریس سے گفتگو کر رہے تھے۔ انہوں نے وبا ئی دور میں ہو رہی انتخابی ریلیوں کے لئے مودی اور شاہ کو نشانہ بنایا۔ انہوں نے کہا کہ یوپی کے عوام، جنہوں نے لائن لگا کر مودی جی کی حکومت تشکیل دی، آج وہ شمشان گھاٹ میں لائنیں لگانے پر مجبور ہیں۔ ایسے میں وزیر اعظم اور وزیر داخلہ عوام کی جانوں کی فکر کرنے کے بجائے انتخابات کی فکر کر رہے ہیں۔ شمشان گھاٹ میں لوگوں کو جلانے کے لئے گھنٹوں انتظار کرنا پڑتا ہے۔ بنارس میں، جس میں مودی جی نے کہا تھا کہ ’مجھے گنگا میّا نے بلایا ہے‘، ہریشچندر گھاٹ پر جمعہ کے روز 125 لاشیں جلا دی گئیں۔ بنارس کو یتیم بنا کر چھوڑ کر مودی جی آج انتخابی مہم میں مصروف ہیں۔

سنجے سنگھ نے یوپی کی صورتحال کو بیان کرتے ہوئے اضلاع میں کورونا معائنہ نہ کروانے کے مسئلے کو اٹھایا۔انہوں نے امبیڈکر نگر میں ایک کیس کا حوالہ دیا جس میں پھیپھڑوں میں ناکامی کے بعد بھی میڈیکل کالج میں مریض کو ونٹیلیٹر نہیں مل سکا۔ انہوں نے بتایا کہ تمام اضلاع کے اسپتالوں میں بستر، آکسیجن، وینٹیلیٹر نہ ملنے کی اطلاعات ہیں۔ گجرات سورت ہو یا بنارس، لکھنؤ، پورا ملک کورونا سے کراہ رہا ہے۔ سنجے سنگھ نے روزانہ انفیکشن کے اعداد و شمار بتاتے ہوئے وزیر اعظم، وزیر داخلہ کی ریلیاں گنائی۔ کہا، انتخابات آتے رہیں گے، لیکن وزیر اعظم اور وزیر داخلہ کو لوگوں کی زندگی کی فکر کرنی چاہئے جو اس وقت انتخابات میں ووٹ دیتے ہیں۔ مرکز کو یوپی کی صورتحال پر نگاہ رکھنا چاہئے اور یہاں اس کے لئے خصوصی مدد کا اعلان کرنا چاہئے۔

سنجے سنگھ نے پریس کانفرنس کے دوران یہ بھی بتایا کہ دہلی حکومت نے کورونا سے متعلق مختلف امور پر مرکز کو خط لکھا ہے۔ حکومت کو چاہئے کہ وہ وزیر اعظم کیئر فنڈ کا سارا حساب ملک کے لوگوں کو دیں۔ اس فنڈ سے راجستھان میں خریدے جانے والے وینٹیلیٹر 90 سے 95 فیصد عیب دار ہیں۔ لہذا، بڑے پیمانے پر بدعنوانی کا امکان ہے۔ پاکستان سے پہلے وطن عزیز کو ویکسینیشن لگوانی چاہیے تھی۔ سنجے سنگھ نے مختلف ممالک میں بھیجی جانے والی بھارتیہ ویکسین پر بھی سوال اٹھایا۔ کہا کہ آج ملک میں شمشان گھاٹ میں لاشیں رکھی ہوئی ہیں۔ یہاں ویکسینوں کی کمی ہے اور لوگ ویکسین لگانے کے لئے بے چین ہیں۔ مودی اپنے ملک والوں کو ویکسینیشن لگانے سے پہلے پاکستان، کینیڈا جیسے ممالک میں ویکسینیشن کرانے میں مصروف ہیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔