لکھیم پور سانحہ: مرکزی وزیر مملکت اجے مشرا کو ہٹانا ہی پڑے گا، راہل گاندھی

راہل گاندھی نے کہا کہ میڈیا توجہ ہٹانے کی کوشش کرتی ہے۔ آج نہ میڈیا اپنا کام کر رہی ہے اور نہ ہی حکومت اپنا کام کر رہی ہے۔

تصویر قومی آواز / وپن
تصویر قومی آواز / وپن
user

یو این آئی

نئی دہلی: کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے کہا کہ لکھیم پور کھیری معاملے میں مرکزی وزیر مملکت برائے امور داخلہ اجے مشرا ’ٹینی‘ کے بیٹے کی جیپ سے کسانوں کو کچلا گیا ہے، اس لئے حکومت کو اس بارے میں ملک کے عوام کو جواب دینا ہوگا اور مرکزی وزیر کو ہٹانا پڑے گا۔

راہل گاندھی نے منگل کو پارلیمنٹ ہاؤس سے وجے چوک تک اپوزیشن کے مارچ کے بعد نامہ نگاروں سے خطا ب کرتے ہوئے کہا کہ اپوزیشن جماعتیں لکھیم پور کھیری معاملے کو بار بار اٹھا رہی ہیں۔ حقائق کی بنیاد پر واضح ہے کہ وزیر کے بیٹے نے کسانوں کو مارا ہے اور وزیر کی جیپ کے نیچے انہیں کچلا گیا ہے۔ اس بارے میں تفتیشی ٹیم کی رپورٹ آئی ہے اور رپورٹ سے واضح ہے کہ ایک سازش کے تحت کسانوں کو جیپ سے کچلنے کا کام ہوا ہے۔


انہوں نے میڈیا پر بھی اپنا کام صحیح طریقہ سے نہیں کرنے کا الزام لگاتے ہوئے کہا کہ میڈیا توجہ ہٹانے کی کوشش کرتی ہے۔ آج نہ میڈیا اپنا کام کر رہی ہے اور نہ ہی حکومت اپنا کام کر رہی ہے۔ حقیقت یہ ہے کہ ہندوستان کے ایک وزیر کے بیٹے نے کسانوں کو جیپ کے نیچے کچلنے کا کام کیا ہے۔ وزیراعظم ایک طرف کسانوں سے معافی مانگتے ہیں اور دوسری طرف ’قاتل‘ وزیر کو اپنی کابینہ میں رکھے ہوئے ہیں۔ ملک کے عوام کے ساتھ جو کیا جارہا ہے اسے قبول نہیں کیا جاسکتا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔