لداخ: چینی فوجیوں کی فائرنگ، ہندوستانی چوکیوں تک پیش قدمی کی کوشش، حالات انتہائی کشیدہ

ہندوستانی فوج کے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ چینی فوجیوں نے ان علاقوں کے قریب ہوائی فائرنگ کی ہے جہاں ہندوستانی فوج موجود ہے، نیز چین اپنے بیانات سے اپنے ملک اور پوری دنیا کو گمراہ کر رہا ہے۔

علامتی تصویر
علامتی تصویر
user

قومی آوازبیورو

نئی دہلی: ہندوستان نے ایل اے سی (حقیقی کنٹرول لائن) پر فائرنگ کے چین کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ فائرنگ ہندوستانی فوجیوں نے نہیں بلکہ چینی فوجیوں نے کی ہے۔ ہندوستانی فوج کے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ چینی فوجیوں نے ان علاقوں کے قریب ہوائی فائرنگ کی ہے جہاں ہندوستانی فوج موجود ہے، نیز چین اپنے بیانات سے اپنے ملک اور پوری دنیا کو گمراہ کر رہا ہے۔ فوج نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ ہندوستانی فوج نے حقیقی کنٹرول لائن کو نہ تو عبور کیا ہے، نہ ہی فائرنگ انجام دی ہے اور نہ ہی کوئی جارحانہ اقدام اٹھایا ہے۔

فوج نے اپنے بیان میں کہا کہ ’’ہندوستان ایل اے سی پر امن برقرار رکھنے کے لئے پرعزم ہے۔ چین ایل اے سی پر اشتعال انگیز سرگرمیاں جاری رکھے ہوئے ہے۔ ہندوستانی فوج نے ایل اے سی کو عبور نہیں کیا اور نہ ہی فائرنگ سمیت کوئی جارحانہ کارروائی انجام دی گئی۔‘‘

فوج نے مزید کہا کہ ’’گزشتہ شب کے واقعے کی بات کریں تو چینی فوجی ہماری پیشگی چوکیوں تک پیش قدمی کی کوشش کر رہے تھے۔ اس پر، دیگر چینی فوجیوں نے اس کا تعاقب کیا اور اپنے فوجیوں کو خوفزدہ کرنے کے لئے پی ایل اے (چینی فوج) کے جوانوں نے فضا میں چند راؤنڈ فائر کیے۔‘‘

چین کا بیان

چینی فوج کی مغربی کمان کے ترجمان سینئر کرنل جانگ شولی کا کہنا ہے کہ بھارتی فوج نے شیپاو ماؤنٹین کے قریب پینگونگ جھیل کے جنوبی علاقے میں دراندازی کی کوشش کی۔ اس اقدام سے ہندوستانی فوج نے دونوں ممالک کے مابین طے پانے والے معاہدہ کی خلاف ورزی کی ہے۔ چین نے کہا کہ ہندوستانی فوج فوری طور پر ایل اے سی سے اپنی فوج کو واپس ہٹائے۔

next