ممبئی: کنگنا رانوت کو ملی توہین آمیز زبان استعمال کرنے کی سزا، ایف آئی آر درج

22 نومبر کو اکالی دل کے لیڈر اور دہلی گردوارہ پربندھک کمیٹی کے سربراہ منجندر سنگھ سرسا کی قیادت میں ایک وفد نے رانوت کے خلاف شکایت درج کرائی تھی اور کنگنا کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا تھا۔

فائل تصویر یو این آئی
فائل تصویر یو این آئی
user

یو این آئی

امرتسر/ممبئی: اداکارہ کنگنا رانوت کے خلاف ممبئی کے کھار پولیس اسٹیشن میں سکھ برادری کے خلاف سوشل میڈیا پر کی گئی ایک پوسٹ میں توہین آمیز زبان استعمال کرنے پر ایف آئی آر درج کی گئی ہے۔ آج یہاں دمدمی ٹکسال کے دفتر سے جاری کردہ ایک بیان میں بتایا گیا کہ سپریم کونسل نیو ممبئی گردوارہ کے چیئرمین بھائی جسپال سنگھ سدھو کی قیادت میں شری گرو سنگھ سبھا گردوارہ کمیٹی کے رکن اور ممبئی کے رہنے والے امرجیت سنگھ سندھو کی جانب سے درج ایف آئی آر نمبر دفعہ 295اے کے تحت مذہبی جذبات بھڑکانے کا مقدمہ درج کیا گیا ہے۔ اس سے قبل سکھ برادری کے لوگوں نے کنگنا کی رہائش گاہ کے سامنے احتجاجی مظاہرہ بھی کیا۔

بھائی سدھو سمیت سکھ بھائی چارے کے رہنماؤں نے سماج میں نفرت پھیلانے کے لیے کنگنا کو ممبئی سے تڑی پار کرنے کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ کنگنا نے نہ صرف سکھوں کے خلاف بلکہ مہاراشٹر کے وزیر اعلی ادھو ٹھاکرے کے خلاف بھی نازیبا زبان استعمال کی ہے۔ کل اکالی دل کے لیڈر اور دہلی گردوارہ پربندھک کمیٹی کے سربراہ منجندر سنگھ سرسا کی قیادت میں ایک وفد نے رانوت کے خلاف شکایت درج کرائی تھی اور کنگنا کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا تھا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔