پنڈت سرپنچ کی ہلاکت کی عدالتی تحقیقات کی جائے: غلام احمد میر

غلام احمد میر نے جموں وکشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر گریش چندرا مرمو سے میونسپل کمیٹیوں کے چیئرمیںوں، کارپوریٹروں اور پنچایتی ادارے سے وابستہ ممبران بشمول سرپنچوں و پنچوں کو سیکورٹی فراہم کرنے کی اپیل کی ہے

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

جموں: جموں وکشمیر پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر غلام احمد میر نے جنوبی کشمیر کے ضلع اننت ناگ میں دو روز قبل نامعلوم بندوق برداروں کے ہاتھوں ہلاک کیے جانے والے کانگریس سے وابستہ پنڈت سرپنچ اجے پنڈت کی ہلاکت کی عدالتی تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔ انہوں نے جموں وکشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر گریش چندرا مرمو سے میونسپل کمیٹیوں کے چیئرمیںوں، کارپوریٹروں اور پنچایتی ادارے سے وابستہ ممبران بشمول سرپنچوں و پنچوں کو سیکورٹی فراہم کرنے کی اپیل کی ہے۔

غلام احمد میر نے بدھ کے روز یہاں کانگریس کارکنوں کی طرف سے اجے پنڈت کی ہلاکت کے خلاف درج کیے گئے احتجاج کے موقع پر ان باتوں کا اظہار میڈیا کے ساتھ بات کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ 'یہ جو اجے جی کی ہلاکت کا واقعہ پیش آیا ہے یہ گزشتہ دو تین ماہ میں پیش آنے والا دوسرا بڑا واقعہ ہے جن میں سرپنچوں یا پنچوں کو نشانہ بنایا گیا ہو۔ ہم لیفٹیننٹ گورنر سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ اس ہلاکت میں عدالتی تحقیقات کرائیں'۔

موصوف صدر نے کہا کہ ہم اس سے قبل ایک اور سر پنچ پیر محمد رفیع کی ہلاکت کی بھی تحقیقات کا مطالبہ کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ان ہلاکتوں سے حکومت کی آنکھیں کھل جانی چاہیے کہ ایک مخصوص علاقے میں ایک مخصوص گروپ کے لوگوں کو کیوں نشانہ بنایا جارہا ہے اور اس کے پیچھے کیا مقصد ہے۔ موصوف نے میونسپل چیئرمینوں، کارپوریٹروں، سرپنچوں اور پنچوں کو سیکورٹی فراہم کرنے کا پر زور مطالبہ کیا۔

قابل ذکر ہے کہ جنوبی کشمیر کے ضلع اننت ناگ کے لارکی پورہ علاقے میں پیر کی شام کو کانگریس سے وابستہ سرپنچ اجے پنڈت کو نامعلوم بندوق برادروں نے گھر کے باہر گولیاں برسا کر ہلاک کردیا۔ کانگریس کے مطابق مہلوک سرپنچ نے متعلقہ حکام سے کئی بار سیکورٹی کی فراہمی کی مانگ کی تھی لیکن انہیں سیکورٹی فراہم نہیں کی گئی تھی۔

next