جے ای ای-نیٹ امتحان: سونیا گاندھی کی سات ریاستوں کے وزرائے اعلیٰ کے ساتھ ورچوئل میٹنگ

جے ای ای اور نیٹ امتحان کا معاملہ سوشل میڈیا پر چھایا ہوا ہے۔ طلباء کا کہنا ہے کہ یہ امتحانات کورونا انفیکشن کے ایسے خطرناک مرحلے میں نہیں ہونے چاہئیں، لیکن اس کا مرکزی حکومت پر کوئی اثر نہیں۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

عمران

نئی دہلی: کانگریس ورکنگ کمیٹی (سی ڈبلیو سی) کی میٹنگ کے بعد کانگریس کی صدر سونیا گاندھی نے جے ای ای - این ای ای ٹی (نیٹ) امتحان اور جی ایس ٹی جمع کرنے کے معاملے پر مودی حکومت کے محاصرہ کی تیاری شروع کر دی ہے۔ سونیا ان امور پر آج سات ریاستوں کے وزرائے اعلی سے تبادلہ خیال کریں گی۔ جن وزرائے اعلیٰ سے آن لائن میٹنگ ہونی ہے ان میں کانگریس حکومت والی ریاستوں کے علاوہ مغربی بنگال کی وزیر اعلی ممتا بنرجی بھی شامل ہیں۔ اس دوران کورونا بحران کی وجہ سے ریاستوں کو ہونے والے معاشی نقصان پر بھی تبادلہ خیال ہوگا۔

خیال رہے کہ جے ای ای اور این ای ایس ٹی امتحان کا معاملہ سوشل میڈیا پر چھایا ہوا ہے۔ طلباء کا کہنا ہے کہ یہ امتحانات کورونا انفیکشن کے ایسے خطرناک مرحلے میں نہیں ہونے چاہئیں۔ لیکن اس کا مرکزی حکومت پر کوئی اثر نہیں۔ نیشنل ٹیسٹنگ ایجنسی جو ان امتحانات کا انعقاد کرتی ہے، نے کہا ہے کہ یہ امتحان اپنے وقت پر یعنی ستمبر میں ہی ہوں گے۔

خیال رہے کہ امتحانات کے لئے نوٹیفکیشن جاری ہونے کے بعد کچھ امیدواروں نے سپریم کورٹ میں مقدمہ دائر کیا تھا۔ جس میں یہ کہا گیا تھا کہ کورونا وائرس انفیکشن کی موجودہ صورتحال میں امتحانات کرانے سے طلبا کی جان کو خطرہ لاحق ہوسکتا ہے۔ لیکن سپریم کورٹ نے بھی امتحانات کے انعقاد کی اجازت دے دی۔

ایجنسی کی جانب سے یہ کہا گیا ہے کہ امتحانی مراکز میں سماجی دوری سمیت ضروری احتیاطی تدابیر اختیار کی جائیں گی۔ وزارت تعلیم طلبہ کی سخت مخالفت کے باوجود امتحان وقت پر کروانا چاہتی ہے۔ جے ای ای کے امتحانات یکم سے 6 ستمبر تک طے ہیں، جبکہ نیٹ کا امتحان 13 ستمبر کو لیا جانا ہے۔ ایسے وقت میں جب روزانہ کورونا کے 60 ہزار سے زیادہ کیسز سامنے آر ہے ہیں، اور کل کیسز کی تعداد 32 لاکھ سے زیادہ ہو گئی ہے اور قریب 60 ہزار اموات ہو چکی ہیں، طلباء اور ان کے اہل خانہ امتحان کے حوالہ سے پریشان ہیں۔

اس معاملہ پر بنگال کی وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی پہلے ہی مرکز کو خط لکھ کر امتحانات ملتوی کرنے کا مطالبہ کر چکی ہیں۔ وزیر اعلیٰ نے وزیر اعظم سے درخواست کی ہے کہ مرکز سپریم کورٹ میں فیصلے کی نظرثانی درخواست دائر کرے۔ ممتا بنرجی نے خط کے ذریعے کہا کہ اگر ستمبر میں امتحانات ہوتے ہیں تو اس سے طلبا کی زندگی متاثر ہوسکتی ہے۔ ان حالات میں امتحانات ملتوی کر دینا چاہیے اس لئے سپریم کورٹ کے فیصلے پر نظر ثانی کی درخواست دی جائے۔ کل وزیرا علیٰ ممتا بنرجی نے ٹوئٹ کرکے بھی امتحانات ملتوی کرنے کی اپیل کی تھی۔ خیا ل رہے کہ سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد آل انڈیا میڈیکل داخلہ امتحان یا این آئی ٹی اور آل انڈیا انجینئرنگ داخلہ امتحان یا جے ای ای (مینز) کے انعقاد کے لئے نوٹیفکیشن جاری کیا ہے۔

سونیا گاندھی کی وزرائے اعلیٰ سے میٹنگ کا دوسرا مسئلہ مرکز کی طرف سے ریاستوں کے جی ایس ٹی کی ادائیگی کا رہے گا۔ کانگریس نے کہا ہے کہ مرکز کے پاس لمبے عرصے سے ریاستوں کا کروڑوں روپیے کا اشیا اور خدمات ٹیکس (جی ایس ٹی) کا بقایہ ہے اور اس کے نہ ملنے سے کئی ریاستوں کی مالی حالت بہت خراب ہے لہٰذا وفاق کے نظریہ کا احترام کرتے ہوئے مرکز کو اس کی جلد ادائیگی کرنا چاہیے۔

کانگریس لیڈران نے منگل کے روز ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ دو روز کے بعد جی ایس ٹی کونسل کا اجلاس ہونا ہے اور کانگریس کے زیر اقتدار ریاستوں کے وزیر خزانہ مرکز سے جی ایس ٹی کے بقایہ کی فوری ادائیگی کرنے کا مطالبہ کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ یہ بقایہ نہ ملنے سے محض کانگریس کے زیر اقتدار ریاست ہی نہیں بلکہ بی جے پی کے زیر اقتدار ریاستوں کو بھی مشکل ہو رہی ہے لہٰذا مرکزی حکومت کو نظریۂ وفاق کا احترام کرتے ہوئے فوراً بقایہ ادا کرنا چاہیے۔

اس ورچوئل میٹنگ میں ممتا کے علاوہ پنجاب کے وزیر اعلیٰ کیپٹن امریندر سنگھ، راجستھان کے وزیر اعلیٰ اشوک گہلوت، چھتیس گڑھ کے وزیر اعلیٰ بھوپیش بگھیل، پڈوچیری کے وزیر اعلیٰ وی نرائن سامی، مہاراشٹر کے وزیر اعلیٰ ادھو ٹھاکرے اور جھارکھنڈ کے وزیر اعلیٰ ہیمنت سورین بھی شامل ہوں گے۔ یہ میٹنگ دوپہر 2.30 بجے شروع ہوگی۔

Published: 26 Aug 2020, 11:40 AM
next