معذور بچے کو فلائٹ پر چڑھنے سے روکنے والے ’انڈیگو‘ پر لگا جرمانہ

انڈیگو ایئرلائن کے ملازمین نے 7 مئی کو معذور بچے کو رانچی ہوائی اڈے پر طیارہ میں سوار ہونے سے روک دیا تھا، انڈیگو نے اس کی وجہ یہ بتائی تھی کہ بچہ طیارہ میں سفر کرنے سے گھبرا رہا تھا۔

انڈیگو ائیر لائنس، تصویر آئی اے این ایس
انڈیگو ائیر لائنس، تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

گزشتہ دنوں رانچی ایئرپورٹ پر انڈیگو کے اہلکاروں نے ایک معذور بچے کو فلائٹ پر چڑھنے سے روک دیا تھا، جس پر کافی ہنگامہ ہوا تھا۔ اب اس معاملے میں ڈی جی سی اے نے انڈیگو ایئرلائن کمپنی پر 5 لاکھ روپے کا جرمانہ عائد کر دیا ہے۔ ڈی جی سی اے نے کہا کہ انڈیگو کے گراؤنڈ اسٹاف نے معذور بچے کے ساتھ جیسا سلوک کیا وہ ٹھیک نہیں تھا اور اس سے حالات بگڑ گئے۔ ڈی جی سی اے نے ایئرلائن کو ’وجہ بتاؤ نوٹس‘ بھی جاری کیا اور واقعہ پر شدید ناراضگی کا اظہار کیا۔

دراصل انڈیگو ایئرلائن کے ملازمین نے 7 مئی کو معذور بچے کو رانچی ہوائی اڈے پر طیارہ میں سوار ہونے سے روک دیا تھا۔ انڈیگو نے اس کی وجہ یہ بتائی تھی کہ بچہ طیارہ میں سفر کرنے سے گھبرا رہا تھا۔ اس واقعہ کے سامنے آنے کے بعد جہاں ڈی جی سی اے نے معاملے میں جانچ کرنے کی ہدایت دی تھی، وہیں مرکزی حکومت نے بھی اس پر نوٹس لیا تھا۔ مرکزی وزیر برائے شہری ہوابازی جیوترادتیہ سندھیا نے اس سلسلے میں ایک ٹوئٹ بھی کیا تھا جس میں بتایا تھا کہ پوری جانچ ان کی نگرانی میں ہی ہوگی۔ سندھیا کے سخت تیور کے بعد ایئرلائن نے معافی مانگ لی تھی۔


بعد ازاں ڈی جی سی اے نے معاملے میں ایک فیکٹ فائنڈنگ ٹیم تشکیل دی۔ تین رکنی ٹیم نے رانچی اور حیدر آباد جا کر ایک ہفتہ تک ثبوت جمع کیے اور پھر ایک رپورٹ تیار کر کے جمع کر دی۔ اسی رپورٹ کی بنیاد پر انڈیگو کے خلاف ڈی جی سی اے کی کارروائی عمل میں آئی ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ معذور بچے کو فلائٹ پر سوار ہونے کی اجازت نہ ملنے کی وجہ سے اس کے ماں باپ بھی نہیں جا سکے۔ بعد میں جب اس پر کافی ہنگامہ ہوا تو دوسری فلائٹ سے ان کے جانے کا انتظام کیا گیا تھا۔

Follow us: Facebook, Twitter, Google News

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔