امریکہ میں 18 سال سے کم عمر کے بچوں پر کوویکسین کے استعمال کے لئے منظوری طلب کی گئی

کوویکسین میں پولیو ویکسین سمیت دیگر بچوں کے ٹیکوں کی طرح ہی ویرو سیل مینوفیکچرنگ پلیٹ فارم کا استعمال کیا گیا ہے۔ کوویکسین کئی اینٹی جنوں کے خلاف اینٹی باڈیز تیار کرتی ہے۔

کو ویکسین، تصویر آئی اے این ایس
کو ویکسین، تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

نئی دہلی: امریکہ میں بھارت بائیوٹیک کی شراکت دار کمپنی آکیوجین نے جمعہ کے روز اطلاع دی ہے کہ اس نے امریکہ میں 2 سال سے 18 سال تک کی عمر کے بچوں پر کوویکسین کے ایمرجنسی استعمال کے لئے یو ایس فوڈ اینڈ ڈرگ ایڈمنسٹریشن (ایف ڈی اے) سے منظوری طلب کی ہے۔ خیال رہے کہ اس ویکسین کو ہندوستانی فرم بھارت بائیوٹیک نے تیار کیا ہے۔

منظوری کے لئے یہ درخواست بھارت بائیوٹیک کی طرف سے ہندوستان میں 2-18 سال کی عمر کے 526 بچوں پر کوویکسین کے 2/3 مرحلہ کے ٹرائل کے نتائج پر مبنی ہے۔ بھارت بائیو ٹیک کے مطابق، بچوں میں اتنا ہی اینٹی باڈی ریسپانس نظر آتا ہے جتنا ہندوستان میں 18 سال سے زیادہ کے لوگوں پر ٹرائل میں نظر آیا تھا۔


عالمی ادارہ صحت نے حال ہی میں بھارت بائیوٹیک کی کوویکسین کے ہنگامی استعمال کو منظوری دینے کی سفارش کی ہے۔ تاہم یہ سفارش صرف 18 سال سے اوپر کے لوگوں کے لئے کی گئی ہے۔ ہندوستان میں ابھی 18 سال سے اوپر کے لوگوں کو کوویکسین دی جا رہی ہے۔

کوویکسین میں پولیو ویکسین سمیت دیگر بچوں کے ٹیکوں کی طرح ہی ویرو سیل مینوفیکچرنگ پلیٹ فارم کا استعمال کیا گیا ہے۔ کوویکسین کئی اینٹی جنوں کے خلاف اینٹی باڈیز تیار کرتی ہے۔ ہندوستان میں ہونے والے تیسرے مرحلہ کے ٹرائل میں کورونا کے خلاف مستقل قوت مدافعت حاصل ہوئی۔ وہیں بچوں پر 2/3 مرحلہ کی آزمائش میں کوئی بھی غیر متوقع واقعہ یا اسپتال میں داخلہ کا واقعہ پیش نہیں آیا۔


کوویکسین کو بھارت بائیوٹیک اور آئی سی ایم آر نے مشترکہ طور پر تیار کیا ہے۔ کورونا ویکسین کے کلینیکل ٹرائلز میں کوویکسین 78 فیصد کارگار ثابت ہوئی تھی۔ بھارت بائیوٹیک کی کوویکسین نے 18 سال سے کم کے بچوں پر ویکسین کا ٹرائل پورا کر لیا ہے۔ ہندوستان کی دوا کو منظور دینے والے ادارے ڈرگ کنٹرولر جنرل آف انڈیا (ڈی جی سی آئی) نے بچوں میں کورونا ویکسین کے استعمال کو منظور فراہم کی ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔