کورونا کی دوسری لہر میں مرکز کے غلط فیصلوں نے 50 لاکھ لوگوں کی جان لی: راہل گاندھی

راہل گاندھی نے اپنے ایک ٹوئٹ میں لکھا ہے’’سچائی۔ کووڈ کی دوسری لہر کے دوران حکومت ہند کے غلط فیصلوں نے ہماری 50 لاکھ بہنوں، بھائیوں، ماؤں اور باپوں کی جان لے لی۔‘‘

راہل گاندھی، تصویر یو این آئی
راہل گاندھی، تصویر یو این آئی
user

تنویر

کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی کورونا بحران میں مودی حکومت کی بدانتظامی کو لے کر لگاتار آواز اٹھا رہے ہیں۔ اب انھوں نے الزام عائد کیا ہے کہ کورونا وبا کی دوسری لہر کے دوران حکومت ہند کے غلط فیصلوں نے پچاس لاکھ لوگوں کی جان لے لی۔ یہاں قابل ذکر ہے کہ منگل کے روز مانسون اجلاس کے دوران مرکزی حکومت سے کورونا بحران میں ہوئی اموات کے تعلق سے سوال کیا گیا تھا، جس کا کوئی واضح جواب نہیں دیا گیا۔ اس پر اپوزیشن پارٹی کے لیڈران نے مودی حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا تھا۔

آج راہل گاندھی نے مرکزی حکومت کے ذریعہ کورونا سے ہلاک ہونے والے لوگوں کی تعداد نہ بتائے جانے پر ایک ٹوئٹ کیا ہے اور کہا ہے کہ دوسری لہر میں 50 لاکھ افراد جاں بحق ہو گئے۔ انھوں نے ٹوئٹ میں لکھا ہے ’’سچائی۔ کووڈ کی دوسری لہر کے دوران حکومت ہند کے غلط فیصلوں نے ہماری 50 لاکھ بہنوں، بھائیوں، ماؤں اور باپوں کی جان لے لی۔‘‘ اس سے قبل بھی راہل گاندھی کورونا سے ہونے والی ہلاکتوں کو لے کر کئی ٹوئٹ کر چکے ہیں اور آکسیجن کی کمی سے ہونے والی اموت پر بھی انھوں نے مرکز کی بدانتظامی کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔


یہاں قابل ذکر ہے کہ ایک امریکی اسٹڈی میں بھی بتایا گیا ہے کہ ہندوستان میں اب تک کورونا اموات سے تقریباً 49 لاکھ افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔ حالانکہ ہندوستان میں جون 2021 تک کورونا وائرس سے ہلاک ہونے والے لوگوں کی آفیشیل تعداد تقریباً 4 لاکھ ہی ہے۔ امریکہ کے سنٹر فار گلوبل ڈیولپمنٹ نے اپنی اسٹڈی میں کورونا کی حالت ہندوستان میں انتہائی بدتر ہونے کا اندازہ لگایا ہے اور کہا کہ اس وبا نے 49 لاکھ لوگوں کی جان اب تک لے لی۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔