ممبئی میں آبروریزی کی شکار متاثرہ نے زخموں کی تاب نہ لا کر دم توڑا، لوہے کی راڈ سے کیا گیا تھا تشدد!

ابتدائی تحقیقات کے مطابق خاتون کی آبروریزی کی گئی اور اس کے نجی اعضا میں لوہے کی راڈ سے حملہ کیا گیا، 34 سالہ متاثرہ کو ٹیمپو کے اندر حیوانیت کا شکار بنایا گیا تھا

علامتی تصویر
علامتی تصویر
user

قومی آوازبیورو

ممبئی: ممبئی کے ساکی ناکہ علاقہ میں عصمت دری اور تشدد کا نشانہ بننے والی خاتون نے ہفتہ کے روز اسپتال میں دم توڑ دیا۔ ممبئی کے مضافاتی علاقہ ساکی ناکہ میں ایک ٹیمپو کے اندر 34 سالہ خاتون کے ساتھ جمعہ کے روز عصمت دری کی گئی گئی تھی اور اس پر بے رحمی سے حملہ بھی کیا گیا تھا۔ خاتون کو علاج کے لئے استپال میں داخل کرایا گیا تھا، جہاں وہ زخموں کی تاب نہ لا سکی اور اس نے دم توڑ دیا۔ پولیس نے معاملہ میں ملزم موہن چوہان (45 سال) کو واقعہ کے کچھ دیر بعد ہی گرفتار کر لیا تھا۔

خبر رساں ایجنسی پی ٹی آئی کے مطابق ایک پولیس عہدیدار نے بتایا کہ جمعہ کو علی الصبح پولیس کنٹرول روم میں ایک فون کال موصول ہوئی کہ خیرانی روڈ پر ایک شخص ایک خاتون کو زد و کوب کر رہا ہے۔ عہدیدار نے بتایا کہ خاتون کی تلاش کے لئے ایک پولیس ٹیم موقع کے لئے روانہ کی گئی۔ بعد میں خون سے لت پت متاثرہ کو میونسپلٹی کی جانب سے چلائے جانے والے راجاواڑی اسپتال میں لے جایا گیا۔


پولیس افسر نے بتایا کہ ابتدائی تحقیقات کے مطابق خاتون کی عصمت دری کی گئی ہے اور اس کے نجی اعضا پر آہنی سلاخ کے ذریعے حملہ کیا گیا تھا۔ انہوں نے بتایا کہ یہ واقعہ سڑک کنارے کھڑے ایک ٹیمپو کے اندر پیش آیا تھا۔ افسر نے بتایا کہ گاڑی کے اندر بھی خون کے داغ پائے گئے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق مہاراشٹر کے سابق وزیر اعلیٰ دیویندر فڑنویس نے کہا ہے کہ ساکی ناکہ کا واقعہ انتہائی افسوس ناک ہے اور یہ انسانیت کو شرمسار کر دینے والی واردات ہے۔ فوری طور پر فاسٹ ٹریک کورٹ تشکیل دی جائے اور ملزمان کو پھانسی کی سزا سنائی جانی چاہئے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔