بہار میں لاک ڈاؤن کا زبردست اثر، سڑکیں سنسان، دکانیں بند، بے وجہ گھر سے نکلنے والوں پر لگا جرمانہ

پٹنہ کے ایک سینئر پولس افسر نے بتایا کہ لاک ڈاؤن پر سختی سے عمل کروانے کے لیے 50 مقامات پر چیک پوسٹ بنایا گیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ بغیر کام کے نکلنے والے لوگوں پر جرمانہ لگایا جا رہا ہے۔

تصویر آئی اے این ایس
تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

بہار میں کورونا کے بڑھتے معاملوں کو لے کر نتیش حکومت نے بدھ سے 15 مئی تک لاک ڈاؤن لگا دیا ہے۔ لاک ڈاؤن کو لے کر پولس اور انتظامیہ بھی سخت نظر آ رہی ہے۔ پیدل بے وجہ گھومنے والے لوگوں پر بھی پولس سختی سے پیش آ رہی ہے۔ پٹنہ کے ایک سینئر پولس افسر نے بتایا کہ لاک ڈاؤن پر سختی سے عمل کروانے کے لیے 50 مقامات پر چیک پوسٹ بنائے گئے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ بغیر کام کے نکلنے والے لوگوں پر جرمانہ لگایا جا رہا ہے جب کہ ضروری کام سے نکلنے والے لوگوں سے وجہ جاننے کی کوشش کی جا رہی ہے۔

بہار میں کورونا انفیکشن کی بڑھتی رفتار میں پٹنہ کی حالت زیادہ فکر انگیز ہے جہاں سب سے زیادہ مریض سامنے آ رہے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ ضلع انتظامیہ کسی بھی حال میں اس چین کو توڑنا چاہ رہی ہے۔ پٹنہ کے ضلع مجسٹریٹ ڈاکٹر چندرشیکھر سنگھ نے اس تعلق سے کہا کہ ضلع کی سرحدوں کو سیل کر دیا گیا ہے اور شہر میں 50 اضافی پولس ٹیم کی تعیناتی کی گئی ہے۔ انھوں نے کہا کہ بے وجہ گھر سے نکلنے والے لوگوں پر جرمانہ عائد کیا جا رہا ہے۔


لاک ڈاؤن کے پہلے دن پٹنہ شہر کے مختلف مقامات پر پولس فورس سختی کرتی ہوئی نظر آئی۔ لاک ڈاؤن کے سبب سڑکیں سنسان رہیں اور دکانیں بھی بند نظر آئیں۔ جن لوگوں کو ضروری سامان خریدنی تھی، وہ 11 بجے تک خریداری کر گھروں میں واپس لوٹ گئے۔

واضح رہے کہ ریاست میں کورونا انفیکشن کی رفتار ان دنوں کافی تیز ہو گئی ہے۔ ریاست میں منگل کو 14794 نئے کورونا کیسز کی شناخت ہوئی ہے جب کہ گزشتہ 24 گھنٹے میں ریکارڈ 105 کورونا مریضوں کی موت ہو گئی ہے۔ پیر کو ریاست میں 11407 کورونا انفیکشن کے معاملے سامنے آئے تھے جب کہ 82 ریضوں کی موت ہوئی تھی۔ منگل کو ملے نئے مریضوں میں پٹنہ میں سب سے زیادہ 2681 معاملے سامنے آئے۔ ریاست میں سرگرم مریضوں کی تعداد 1 لاکھ 10 ہزار 430 تک پہنچ گئی ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔