وزیر کا بیٹا لوگوں کو کچلے تو آئین خطرے میں ہے: راہل گاندھی

منگل کو یہاں جاری ایک بیان میں راہل گاندھی نے کہا کہ حکومت مسلسل غلط اقدامات اٹھا رہی ہے اور ہر قدم کے ساتھ ملک کا آئین خطرے میں آ رہا ہے۔

راہل گاندھی، تصویر یو این آئی
راہل گاندھی، تصویر یو این آئی
user

یو این آئی

نئی دہلی: کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے لکھیم پور واقعہ پر کہا ہے کہ اگر کسی خاتون کو ایف آئی آر کے بغیر حراست میں رکھا جاتا ہے اور ایک وزیر کا بیٹا ستیہ گرہیوں کو اپنی گاڑی سے کچلتا ہے تو یقینی طور پر ملک کا آئین خطرے میں ہے۔

منگل کو یہاں جاری ایک بیان میں راہل گاندھی نے کہا کہ حکومت مسلسل غلط اقدامات اٹھا رہی ہے اور ہر قدم کے ساتھ ملک کا آئین خطرے میں آ رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر کسی وزیر کا بیٹا ستیہ گرائیوں (کسانوں) کو اپنی گاڑی کے نیچے کچلتا ہے تو ملک کا آئین خطرے میں ہے۔ اگر ویڈیو منظر عام پر آنے کے بعد بھی اسے حراست میں نہیں لیا گیا تو ملک کا آئین خطرے میں ہے۔


انہوں نے کانگریس کی جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی کی نظربندی کو آئین کے لیے خطرہ قرار دیتے ہوئےکہا کہ ’’اگر کسی خاتون لیڈر کو 30 گھنٹے تک ایف آر آئی کے بغیر حراست میں لیا جائے تو ملک کا آئین خطرے میں ہے۔ اگر کسی کو بھی متاثرین کے اہل خانہ سے ملنے کی اجازت نہیں ہے تو ملک کا آئین خطرے میں ہے۔ اگر یہ ویڈیو کسی کو تکلیف نہیں پہنچاتی تو انسانیت بھی خطرے میں ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔