خلیجِ بنگال سے اٹھنے والے طوفان ’جواد‘ کا خطرہ، اوڈیشہ، آندھرا اور بنگال میں ہائی الرٹ

ملک میں کورونا کے نئے ویرینٹ اومیکرون کے بڑھ رہے خطرے کے درمیان اب کئی ریاستوں پر گردابی طوفان جواد کا خطرہ بھی منڈلا رہا ہے، یہ طوفان ہفتہ کے روز اوڈیشہ کے ساحلوں سے ٹکرا سکتا ہے

گردابی طوفان جواد کا خطرہ / آئی اے این ایس
گردابی طوفان جواد کا خطرہ / آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

نئی دہلی: ملک میں کورونا کے نئے ویرینٹ اومیکرون کے بڑھ رہے خطرے کے درمیان اب کئی ریاستوں پر گردابی طوفان جواد کا خطرہ بھی منڈلا رہا ہے۔ یہ طوفان ہفتہ کے روز اوڈیشہ کے ساحلوں سے ٹکرا سکتا ہے۔ تاؤتے اور یاس کے بعد یہ تیسرا طوفان ہے جو رواں سال ساحلی علاقوں میں تباہی مچا سکتا ہے۔ جواد کے پیش نظر محکمہ موسمیات نے ملک بھر کے لئے الرٹ جاری کر دیا ہے۔

محکمہ موسمیات (آئی ایم ڈی) کے مطابق خلیج بنگال کے جنوب مشرق سے گزشتہ 6 گھنٹوں کے دوران دباؤ 32 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے مغرب - شمال مشرقی سمت میں پیش قدمی کر رہا ہے۔ اس کے شمالی آندھرا پردیش سے مغربی وسطی خلیج بنگال تک پہنچنے کا قوی امکان ہے۔ یہ طوفان آئندہ 4 دسمبر یعنی ہفتہ کی صبح 80-90 کلومیٹر فی گھنٹی کی رفتار سے جنوبی اوڈیشہ کے ساحلوں سے ٹکرا سکتا ہے۔ اس کے پیش نطر مغربی بنگال، آندھرا پردیش اور اوڈیشہ میں بھاری بارش کا امکان ظاہر کیا گیا ہے۔


طوفان جواد کے پیش نظر نیشنل ڈیزاسٹر ریسپانس فورس (این ڈی آر ایف) کی کل 29 ٹیموں کو اب تک اوڈیشہ میں تعینات کیا گیا ہے۔ یہ ٹیمیں کشتیوں، درخت کاٹنے والے اوزاروں اور ٹیلی مواصلات سے آراستہ ہیں۔ اس کے ساتھ ہی 33 این ڈی آر ایف کی ٹیموں کو تیار رہنے کے لئے کہا گیا ہے۔ کوسٹ گارڈ کی بھی کئی ٹیموں کو تعینات کر دیا گیا ہے۔ فی الحال وزارت داخلہ کی جانب سے صورت حال پر 24 گھنٹے نظر رکھی جا رہی ہے اور وزارت ریاستی حکومتوں اور متعلقہ مرکزی ایجنسیوں سے بھی مسلسل رابطہ میں ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔