پی ایم مودی کے پارلیمانی حلقہ میں ’اے بی وی پی‘ کا صفایا، این ایس یو آئی نے کاشی ودیاپیٹھ اسٹوڈنٹس یونین الیکشن میں لہرایا پرچم

مہاتما گاندھی کاشی ودیاپیٹھ اسٹوڈنٹس یونین الیکشن میں اے بی وی پی کی شکست فاش ہوئی ہے۔ این ایس یو آئی پینل نے تاریخی جیت درج کرتے ہوئے نائب صدر اور جنرل سکریٹری سمیت 6 فیکلٹی عہدوں پر قبضہ کیا ہے۔

فتح پر جشن مناتے کانگریس طلبا
فتح پر جشن مناتے کانگریس طلبا
user

قومی آوازبیورو

وزیر اعظم نریندر مودی کے پارلیمانی حلقہ واقع مہاتما گاندھی کاشی ودیاپیٹھ کے اسٹوڈنٹس یونین الیکشن میں آر ایس ایس کی طلبا تنظیم ’اے بی وی پی‘ کا صفایا ہو گیا ہے۔ کاشی ودیاپیٹھ طلبا یونین کے الیکشن میں اے بی وی پی کو زبردست جھٹکا دیتے ہوئے این ایس یو آئی پینل نے تاریخی جیت درج کی ہے۔ این ایس یو آئی نے نائب صدر، جنرل سکریٹری سمیت 8 میں سے 6 فیکلٹی عہدوں پر قبضہ کیا ہے۔ صدر عہدہ پر سماجوادی پارٹی امیدوار نے کامیابی حاصل کی۔

گزشتہ منگل کو اختتام پذیر مہاتما گاندھی کاشی ودیاپیٹھ اسٹوڈنٹس یونین الیکشن کے نتائج کا آج اعلان ہوا۔ اس تاریخی جیت کی جانکاری دیتے ہوئے این ایس یو آئی نے بتایا کہ نائب صدر عہدہ پر این ایس یو آئی امیدوار سندیپ پال کو 1269 ووٹوں سے کامیابی ملی، جب کہ جنرل سکریٹری عہدہ پر پرفل پانڈے 801 ووٹوں سے کامیاب ہوئے۔

اسٹوڈنٹس یونین الیکشن میں شاندار کارکردگی کے بعد این ایس یو آئی شمالی اتر پردیش کے انچارج اویناش یادو نے کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی کے پارلیمانی حلقہ میں این ایس یو آئی کی بڑی جیت طلبا کے اندر روزگار اور تعلیم کی خراب صورت حال پر ناراضگی کی علامت ہے۔ انھوں نے مزید کہا کہ طلبا نے اے بی وی پی کی غنڈہ گردی کو مسترد کرتے ہوئے این ایس یو آئی کا ساتھ دیا ہے۔ ہم ان کی آواز کو مزید مضبوط کریں گے اور آنے والے انتخابات میں سبھی عہدوں پر جیت درج کریں گے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔