’’امید ہے پی ایم مودی نئے سال میں ملک سے جھوٹ بولنا بند کر دیں گے‘‘

کانگریس نے کہا کہ ملک کے عوام کونئے سال میں ایسے ہندوستان کی تعمیر کی امید ہے جہاں حکومت عوامی مفاد میں فیصلہ لینے کے ساتھ ساتھ اعلیٰ نظریات، امن اورخوشحالی کے ساتھ ملک کو آگے بڑھانے کے لئے کام کرے۔

پی ایم مودی، تصویر پی آئی بی
پی ایم مودی، تصویر پی آئی بی
user

قومی آوازبیورو

نئی دہلی: کانگریس نے وزیراعظم نریندر مودی پر براہ راست حملہ بولتے ہوئے کہا ہے کہ گزشتہ سال وہ چینی دراندازی جیسے متعدد امور پر ملک سے جھوٹ بولتے رہے ہیں، لیکن پارٹی کو توقع ہے کہ 2021 میں پی ایم مودی کسی بھی امورپر جھوٹ نہیں بولیں گے۔ کانگریس نے اپنے سرکاری پیج پر آج ایک ٹوئٹ کیا ہے جس میں لکھا ہے کہ ’’ہمیں امید ہے مسٹر مودی نئے سال پر ملک سے چینی دراندازی، پی ایم کیئرس اور دیگر کسی بھی امور پر ملک سے جھوٹ بولنا بندکردیں گے۔‘‘

کانگریس نے ایک ماہ سے زیادہ وقت سے چل رہی کسان تحریک کے درمیان حکومت پر عوام کی آواز دبانے کا بھی الزام لگایا اورکہا کہ اسے یہ امید ہے کہ 2021 میں حکومت سمجھے گی کہ ہمارے لوگوں کو احتجاج کرنے کا حق ہے۔ ہمارے لوگوں کو آزادانہ تقریر کا حق ہے۔ ہمارے لوگوں کو پریس کی آزادی کا حق ہے۔ توقع ہے 2021 میں ہماری حکومت اسے سمجھے گی۔

پارٹی نے مزید کہا کہ’’مضبوط شہری ہی مضبوط قوم کی تعمیر کرنے والا ہوتا ہے اس لیے ہم مانتے ہیں کہ حاشیے پر بیٹھے اور کمزور طبقے کے لوگوں کو مضبوط بنانے کے لیے سب کام کریں۔ ہماراہدف کبھی بھی اقتدار اور طاقت حاصل کرنا نہیں رہا بلکہ ایسے معاشرے کی تعمیر رہی ہے جہاں تمام شہریوں کو انصاف ملے۔ ہمارایہ اصول ہمیں مسلسل کام کرنے کی ترغیب دیتا ہے اور اسی کی بنیاد پر کیا گیا ہمارا ہرفیصلہ عام آدمی کے مفاد تک پہنچنے والا ہوتا ہے۔‘‘ کانگریس نے آگے کہا کہ ’’پارٹی مساوات کے اصول پر یقین رکھتی ہے اور اسی پر کام کرتی ہے۔ ہمارے لیے ملک کاہرشہری اہم ہے اورہم ذات، طبقات، مسلک زبان علاقے یا امتیاز کی بنیادپر کبھی کام نہیں کرتے ہیں۔‘‘

کانگریس نے کہا کہ ملک کے عوام کونئے سال میں ایسے ہندوستان کی تعمیر کی امید ہے جہاں حکومت عوامی مفاد میں فیصلہ کرنے کے اہل ہونے کے ساتھ ساتھ اعلیٰ نظریات، امن اورخوشحالی کے ساتھ ملک کو آگے بڑھانے کے لئے کام کرے۔

(یو این آئی ان پٹ کے ساتھ)

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


پسندیدہ ترین
next