حج 2021: ہندوستانی عازمین کی روانگی صرف 10 مراکز سے، ’حفاظت کے ساتھ عبادت‘ کا عزم

مختار عباس نقوی نے کہا کہ ممکن ہے اس بار عازمین حج کی تعداد میں کمی واقع ہو اور ہر ایک عازم حج کو سعودی عرب پہنچنے کے بعد کئی گھنٹے کوارنٹائن میں رکھا جائے۔

مختار عباس نقوی، تصویر ٹوئٹر
مختار عباس نقوی، تصویر ٹوئٹر
user

یو این آئی

ممبئی: مرکزی وزیر برائے اقلیتی امور اور حج مختار عباس نقوی نے آج یہاں حج 2021 کا اعلان "حفاظت کے ساتھ عبادت" کے نعرے کے ساتھ کرتے ہوئے مطلع کیا کہ اس بار سعودی عرب حکومت کی جاری کردہ ہدایات پر عمل کیا جائے گا، اس کا مقصد اپنی اور پوری دنیا کی صحت وسلامتی کا بھی خیال رکھنا ہے، جبکہ روانگی اور واپسی کے مراکز میں احتیاطی طور پر کمی کردی گئی ہے۔ اب صرف دس ہوائی اڈوں کا استعمال کیا جائےگا ورنہ ماضی میں 21 مقامات شامل رہے ہیں اور انکم ٹیکس ریٹرن فائنل کرنے کے معاملہ میں وزارت مالیات اور دیگر وزارت اور شعبوں سے گفت وشنید جاری ہے۔ اور مثبت حل نکلنے کا امکان ہے۔

ممبئی میں حج کمیٹی آف انڈیا کے صدر دفتر میں حج 2021 کے درخواست فارم اور کمیٹی کی ہدایات کا اجراء اور یونین پبلک سروس کمیشن کے پریلم امتحانات میں کامیاب ہونے والے امیدواروں کی تہنیت کی تقریب سے خطاب کر رہے تھے۔ مختار عباس نقوی نے مزید کہا کہ امکان ہے کہ اس بار عازمین حج کی تعداد میں کمی واقع ہو اور ہرایک عازم حج کو سعودی عرب آمد کے بعد کئی گھنٹے کوارنٹائن میں رکھا جائے، جبکہ رہائش گاہ میں مکینوں کی تعداد بھی کم کی گئی ہے۔ بلا محرم۔ جانے والی خواتین کے لیے بھی شرائط شامل ہوں گی جبکہ عازمین کی عمر کے بارے میں بھی سعود حکومت کی ہدایات پر عمل ہوگا۔

مرکزی وزیر برائے اقلیتی امور مختار عباس نقوی کے ذریعہ کورونا کے چیلنجوں کے پیش نظر بڑی تبدیلیوں اورحج 2021ء کے اعلان کے ساتھ ہی آن لائن درخواستیں دینے کا عمل شروع ہوگیا ہے جوکہ 10 دسمبر تک جاری رہے گا۔ اس موقع پر مختار نقوی نے کہا کہ وبائی امراض کے حالات کے پیش نظر قومی و بین الاقوامی پروٹوکول کے رہنما خطوط پر مستعدی سے عمل کیا جائے گا۔ حج 2021 کے لئے درخواستیں جمع کروانے کی آخری تاریخ 10 دسمبر ہوگی۔ حج کے لئے درخواستیں آن لائن، موبائل ایپ اور آن لائن کے ذریعہ دی جاسکتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حج 2021 کی ادائیگی کا عمل جون جولائی کے مہینے میں شروع ہوگا۔ حج کا پورعمل اہلیت و عمر کے معیار، محنت کے حالات اور دیگر ضروری ہدایات کے تحت حکومت سعودی عرب اور حکومت ہند کی طرف سے کورونا آفت کے بعد کیے گئے فیصلوں کے مطابق ہوگا۔ صحت عامه، حفاظت اور حکومت سعودی عرب، وزارت اقلیتتی امور، وزارت صحت، وزارت خارجه، وزارت شہری ہوابازی، حج کمیٹی آف انڈیا، سعودی عرب میں ہندوستانی سفارت خانہ، قونصل جنرل ہند، جدہ وغیرہ نے بڑے غور خوض کے بعد حج 2021 کو حتمی شکل دی ہے۔

مختار عباس نقوی نےمطلع کیا کہ بنا محرم جانے والی خواتین کو سعودی عرب حکومت کے ذریعہ مقررہ شرط کے بعد ہی جانے دیا جائے گا، البتہ رجسٹریشن فیس تیں سو روپئے نہیں لی جائے گی۔ اس کے ساتھ ہی گزشتہ سال کی درخواستوں کو قبول نہیں کیا جائے گا بلکہ نئی درخواستیں قبول کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ حج پر جانے والے ہر ایک عازم کو کورونا ٹیکہ لگانا ہوگا اور 72 گھنٹے پہلے کورونا ٹیسٹ بھی لازمی ہوگا۔

مرکزی وزیر نے مزید بتایا کیا کہ اب 21 کے بجائے روانگی صرف 10مقامات سے ہوگی۔ممبئی، دہلی، احمدآباد، بنگلورو، کوچی، گوہاٹی، لکھنو، حیدرآباد، کولکتہ، سری نگر شامل ہیں۔ ممبئی سے ایم پی، گوا، دمن دیو، دہلی سے ہریانہ، پنجاب، ہماچل، اتراکھنڈ اور مغربی یوپی، راجستھان کے عازمین سفر کریں گے جبکہ احمد آباد سے گجرات، کوچی سے کیرالا، تمل ناڈو، پڈوچری، بنگورو سے کرناٹک، حیدراباد سے آندھراپردیش اور تلنگانہ کے عازمین سفر کریں گے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔