گجرات: ایک گروپ پر انکم ٹیکس کا چھاپہ، 100 کروڑ سے زائد کے اثاثوں کا انکشاف

تلاشی مہم میں تقریباً 2.5 کروڑ روپے کی بے حساب نقدی اور ایک کروڑ روپے کے زیورات بھی برآمد ہوئے ہیں۔ 16 بینک لاکرز پر پابندی لگا دی گئی ہے۔

علامتی فائل تصویر یو این آئی
علامتی فائل تصویر یو این آئی
user

یو این آئی

نئی دہلی: محکمہ انکم ٹیکس (آئی ٹی) نے کیمیکل کی تیاری اور ریئل اسٹیٹ کی ترقی میں مصروف ایک سرکردہ گروپ کے گجرات اور سلواسا میں پھیلے 20 سے زیادہ مقامات پر چھاپے مار کر 100 کروڑ روپے سے زیادہ کی غیر ظاہر شدہ آمدنی کا پتہ لگایا ہے۔ گزشتہ روز محکمہ انکم ٹیکس کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ محکمہ نے 18 نومبر 2021 کو کیمیکلز کی تیاری اور غیر منقولہ جائیداد کی ترقی میں مصروف ایک سرکردہ گروپ کے احاطے میں تلاشی اور ضبطی کی کارروائی کی ہے۔ اس مہم میں گجرات کے واپی اور سری گام، سلواسا اور ممبئی میں پھیلے 20 سے زیادہ کیمپس کی اسکریننگ کی گئی۔

تلاشی مہم میں تقریباً 2.5 کروڑ روپے کی بے حساب نقدی اور ایک کروڑ روپے کے زیورات بھی برآمد ہوئے ہیں۔ 16 بینک لاکرز پر پابندی لگا دی گئی ہے۔ تلاشی کے دوران ملنے والے دستاویزات اور شواہد کے ابتدائی تجزیے سے ظاہر ہوتا ہے کہ تخمینہ غیر ظاہر شدہ آمدنی 100 کروڑ روپے سے زیادہ ہونے کا امکان ہے۔ اس معاملے میں مزید تفتیش جاری ہے۔


دستاویزات، ڈائریوں اور ڈیجیٹل ڈیٹا کی شکل میں ایک بڑی تعداد میں مجرمانہ شواہد جو کہ گروپ کی جانب سے کمائی گئی بھاری غیر محسوب آمدنی اور کارروائی کے دوران اثاثوں میں اس کی سرمایہ کاری کو ظاہر کرتے ہیں اور انہیں ضبط کر لیا گیا ہے۔ ملنے والے شواہد واضح طور پر مختلف طریقوں کو اپناتے ہوئے ٹیکس قابل آمدنی کی چوری کی نشاندہی کرتے ہیں جیسے کہ پیداوار کی انڈر رپورٹنگ، خریداری کو بڑھانے کے لیے سامان کی اصل ڈیلیوری کے بغیر بوگس پرچیز انوائس کا استعمال، بوگس گڈز اینڈ سروسز ٹیکس (جی ایس ٹی) قرضوں کا فائدہ اٹھانا، بوگس کمیشن کا دعویٰ کرنا الزامات، وغیرہ۔ گروپ نے رئیل اسٹیٹ کے لین دین میں بھی فنڈز حاصل کیے ہیں۔ اس دوران، غیر منقولہ جائیدادوں میں سرمایہ کاری میں نقد لین دین اور نقد قرضوں سے متعلق کئی مجرمانہ ثبوت بھی ضبط کیے گئے ہیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔