جشپور حادثہ: وزیر اعلیٰ بگھیل نے مہلوکین کے کنبہ کو 50 لاکھ معاوضہ دینے کا کیا اعلان

چھتیس گڑھ کے وزیر اعلیٰ بھوپیش بگھیل نے بتایا کہ اس حادثہ کے ملزمین کو کل ہی گرفتار کر لیا گیا تھا، اس کے علاوہ پولیس انتظامیہ نے ٹی آئی کو لائن اٹیچ، ایس آئی کو معطل کر دیا ہے۔

تصویر آئی اے این ایس
تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

چھتیس گڑھ کے وزیر اعلیٰ بھوپیش بگھیل نے وجے دشمی کے دن جشپور ضلع کے پتھل گاؤں علاقہ میں جلوس پر گاڑی چڑھائے جانے کے حادثہ میں جان گنوانے والے شخص گورو اگروال کے کنبہ کو 50 لاکھ روپے معاوضہ دینے کا اعلان کیا ہے۔ حادثہ کے فوراً بعد کارروائی کرتے ہوئے پولیس نے دونوں ملزمین کو گرفتار کر لیا تھا۔

واضح رہے کہ پتھل گاؤں علاقہ میں وجے دشمی کے دن دوپہر تقریباً ایک بجے بھکت درگا ویسرجن کرنے سڑک پر جشن مناتے ہوئے چل رہے تھے۔ تبھی ایک تیز رفتار گاڑی کے ڈرائیور نے گاڑی بھکتوں پر چڑھا دی۔ اس واقعہ میں گورو اگروال کی موت ہو گئی، جب کہ کئی دیگر زخمی ہو گئے۔


اس تعلق سے فوری کارروائی کرتے ہوئے دو ملزمین کو گرفتار کر لیا گیا تھا۔ دونوں گانجہ اسمگلر بتائے جا رہے ہیں۔ 21 سالہ ملزم ببلو وشوکرما بیڈھن کا باشندہ بتایا جا رہا ہے، جب کہ دوسرا ملزم ششو پال ساہو برگوام سنگھرولی کا باشندہ ہے۔

جشپور پولیس سپرنٹنڈنٹ وجے اگروال نے حادثہ کے بعد بتایا تھا کہ اندھا دھند رفتار میں کار چلانے والے ملزم نوجوان اور اس کے ساتھی کو گرفتار کر لیا گیا۔ کار سے بڑی مقدار میں گانجہ بھی برآمد کیا گیا ہے۔ دونوں مدھیہ پردیش کے رہنے والے ہیں اور وہ چھتیس گڑھ سے جا رہے تھے۔ اس واقعہ میں ایک شخص کی موت ہو گئی جب کہ 16 دیگر زخمی ہو گئے۔ ان میں دو لوگوں کو ایکسرے میں فریکچر کا پتہ چلا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔