’رات میں کرفیو اور دن میں ریلی سمجھ سے بالاتر‘، ورون گاندھی کا پھر یوگی حکومت پر حملہ

سال 2022 میں یوپی میں ہونے والے اسمبلی انتخابات کے پیش نظر بی جے پی اور سماج وادی پارٹی (ایس پی) سمیت دیگر اپوزیشن پارٹیاں ریلیوں اور یاتراؤں کے ذریعہ زور و شور سے انتخابی تشہیر میں مصروف ہیں۔

ورون گاندھی، تصویر یو این آئی
ورون گاندھی، تصویر یو این آئی
user

یو این آئی

لکھنؤ: بی جے پی رکن پارلیمان ورون گاندھی نے بڑھتے کورونا انفکشن کی وجہ سے رات میں کرفیو نافذ کرنے کے فیصلے پر سوالیہ نشان لگاتے ہوئے کہا کہ رات میں کرفیو کا نفاذ اور دن میں ریلیوں میں لاکھوں افراد کو بلانا یہ عام شہری کی سمجھ سے بالاتر ہے۔

ورون نے پیر کو اس ضمن میں ٹوئٹ کیا اور لکھا ’رات میں کرفیو کا نفاذ اور دن میں ریلیوں میں لاکھوں افراد کو بلانا، یہ عام شہری کی سمجھ سے پرے ہے‘۔ انہوں نے کہا کہ ’یوپی کی محدود طبی سہولیات کے پیش نظر ہمیں ایمانداری سے یہ طے کرنا پڑے گا کہ ہمیں مہلک اومیکرون کے پھیلاؤ کو روکنا ہے یا انتخابی طاقت کا مظاہرہ‘۔


قابل ذکر ہے کہ سال 2022 میں یوپی میں ہونے والے اسمبلی انتخابات کے پیش نظر بی جے پی اور سماج وادی پارٹی (ایس پی) سمیت دیگر اپوزیشن پارٹیاں ریلیوں اور یاتراؤں کے ذریعہ زور و شور سے انتخابی تشہیر میں مصروف ہیں۔ وہیں دوسری جانب ملک میں کورونا کے بڑھتے معاملات کو دیکھتے ہوئے اترپردیش میں 25 دسمبر کی رات سے شبینہ کرفیو نافذ کیا گیا ہے جو رات 11بجے سے صبح پانچ بجے تک نافذ العمل ہوگا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔