دہلی میں کورونا بے قابو، رات کا کرفیو ناکافی، اسکول، میٹرو، جم اور شادی ہالز پر نئی پابندیوں کا امکان

قومی راجدھانی دہلی میں فی الحال رات کا کرفیو نافذ ہے لیکن اومیکرون کا خطرہ بڑھتا ہی جا رہا ہے، اس کے پیش نظر اضافی اقدامات اٹھاتے ہوئے نئی پابندیوں کا اعلان کیا جا سکتا ہے۔

دہلی نائٹ کرفیو / قومی آواز / وپن
دہلی نائٹ کرفیو / قومی آواز / وپن
user

قومی آوازبیورو

نئی دہلی: کورونا کے نئے ویرینٹ اومیکرون کا خطرہ مسلسل بڑھ رہا ہے، جس کی وجہ سے دہلی میں مزید پابندیاں عائد کی جا سکتی ہیں۔ اومیکرون کے کیسز بڑھنے کے بعد کچھ دوسری ریاستوں کی طرح دہلی میں بھی رات کا کرفیو دوبارہ نافذ کر دیا گیا ہے لیکن اس سے کیسز کی رفتار میں کمی نہیں آ رہی، لہٰذا مزید پابندیاں لگائی جا سکتی ہیں۔ نئی پابندیوں کے حوالہ سے آج فیصلہ کیا جا سکتا ہے، جس میں اسکولوں، میٹرو، بس سروس کے ساتھ ساتھ جم اور شادی ہالوں پر بھی نئی پابندیوں کا فیصلہ کیا جائے گا۔

دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال آج کورونا معاملے پر افسران کے ساتھ ایک اعلیٰ سطحی جائزہ میٹنگ کریں گے۔ 12 بجے ہونے والے اس اہم اجلاس میں جی آر اے پی (گریڈڈ رسپانس ایکشن پلان) کو نافذ کرنے پر غور کیا جا سکتا ہے۔


دہلی حکومت نے جولائی 2021 میں کورونا کی تیسری لہر سے نمٹنے کے لیے گریڈڈ ریسپانس ایکشن پلان تیار کیا۔ اس کے تحت دہلی میں لاک ڈاؤن کب نافذ ہوگا اور یہ کب ختم ہوگا، اس پر کوئی تذبذب نہیں رہے گا۔ جی آر اے پی الرٹ کے مطابق اگر مسلسل 2 دنوں تک نمونوں کے پازیٹو پائے جانے کی شرح 0.5 فیصد درج کی جاتی ہے تو دہلی میں گریڈڈ رسپانس ایکشن پلان کے تحت ’یلو الرٹ‘ نافذ کیا جا سکتا ہے۔

اگر صورت حال مزید خراب ہوتی ہے تو دہلی حکومت نے اس کے مطابق بھی منصوبہ تیار کیا ہے۔ انفیکشن کی شرح ایک فیصد سے زیادہ ہونے پر لیول-2 یعنی امبر الرٹ، 2 فیصد سے زیادہ ہونے پر لیول تھری یعنی اورنج الرٹ اور 5 فیصد سے زیادہ خراب ہونے پر لیول-4 یعنی ریڈ الرٹ جاری کیا جائے گا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔