شیر میسور ٹیپو جینتی نہ منائے جانے کے خلاف کانگریس تحریک چلائے گی

وزیر اعلیٰ بی ایس یدی یورپا نے گذشتہ ہفتے ریاست کی باگ ڈور سنبھالنے کے بعد شیر میسور ٹیپو سلطان کی جینتی پر سرکاری تقریب کے انعقاد کو رد کیے جانے کا اعلان کیا تھا۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا

یو این آئی

بنگلور: بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) حکومت کی جانب سے کرناٹک کانگریس نے میسور کے حکمراں ٹیپو سلطان کی جینتی کے سرکاری انعقاد کو ملتوی کیے جانے کے تعلق سے پوری ریاست میں تحریک چلائے گی۔

کانگریس کے ریاستی سینئر رہنماؤں کی جانب سے جمعرات کو ایک میٹنگ میں یہ فیصلہ کیا گیا۔ میٹنگ میں کانگریس اراکین اسمبلی پارٹی کے لیڈر سدارمیا، ریاستی کانگریس کے صدر دنیش گنڈوراؤ، ایچ کے پاٹل، ایچ سی مہادیوپَّا اور دیگر رہنما موجود تھے۔ میٹنگ میں یہ بھی فیصلہ کیا گیا کہ بی جے پی حکومت کے اس حکم کے خلاف ریاست کے عوام سے رائے لی جائے گی۔

وزیر اعلیٰ بی ایس یدی یورپا نے گذشتہ ہفتے ریاست کی باگ ڈور سنبھالنے کے بعد شیر میسور ٹیپو سلطان کی جینتی پر سرکاری تقریب کے انعقاد کو رد کیے جانے کا اعلان کیا تھا۔ یہ فیصلہ بی جے پی کے جی بوپیَّا کی اس عرضی کے تناظر میں کیا گیا جس میں کہا گیا تھا کہ ضلع میسور کے لوگوں نے سابقہ حکومت کے حکم پر سخت اعتراض ظاہر کیا ہے۔

کانگریس کے رہنماؤں کا کہنا ہے کہ ٹیپو کی جینتی کا انعقاد رد کیے جانے کے فیصلے سے بی جے پی حکومت کے ذریعے اس شخص کی بے حرمتی ظاہر ہوتی ہے جس نے برطانوی نو آبادیات کے خلاف جنگ کی اور شہید ہوئے۔

پارٹی ذرائع کے مطابق کانگریس کے رہنماؤں نے ان اسمبلی سیٹوں پر مضبوط امیدوار اتارنے کا فیصلہ کیا ہے جو 15 باغی اراکین اسمبلی کے نا اہل ٹھہرائے جانے کے بعد خالی ہوئی ہیں۔