ہریانہ اور مہاراشٹر انتخابات حقیقی مسائل پر لڑے جائیں گے: کانگریس

کانگریس نے مہاراشٹر اور ہریانہ اسمبلی انتخابات کے اعلان کا خیر مقدم کرتے ہوئے سنیچر کو کہا ہے کہ دونوں ریاستوں میں پارٹی کھیتی، کسان، بے روزگاری اور معیشت میں مندی جیسے اصل مسائل اٹھائے گی۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

نئی دہلی: کانگریس نے مہاراشٹر اور ہریانہ اسمبلی انتخابات کے اعلان کا خیر مقدم کرتے ہوئے سنیچر کو کہا ہے کہ دونوں ریاستوں میں پارٹی کھیتی، کسان، بے روزگاری اور معیشت میں مندی جیسے اصل مسائل اٹھائے گی۔ کانگریس ترجمان پون کھیڑا نے یہاں پارٹی ہیڈکوارٹر میں نامہ نگاروں سے کہا کہ دو اہم ریاستوں میں انتخابات کی تاریخوں کے اعلان کا پارٹی خیر مقدم کرتی ہے۔ ان دونوں انتخابات کے لئے پارٹی پوری مضبوطی کے ساتھ تیار ہے۔

انہوں نے کہا کہ کانگریس پوری طاقت سے ایسے مسائل اٹھائے گی جن مسائل سے حکومت آپ کا، ہم سب کا دھیان ہٹانے کی کوشش کرتی آئی ہے۔ کھیڑا نے کہا کہ لاکھوں کسان اپنے حق کا مطالبہ کرتے ہوئے دہلی کی سرحد پر آکراپنے گنا کی ادائیگی کا 20000 ہزار کروڑ روپے کا مطالبہ کررہے ہیں۔ یہ کسان ہریانہ اور مغربی اترپردیش کے ہیں۔


ہریانہ اور مہاراشٹر میں کسانوں کی خودکشی سنگین مسئلہ ہے جو اور خطرناک صورت اختیار کرتی جارہی ہے۔ لوگ حکومت کو بدلنے کا انتظار کررہے ہیں۔ ہریانہ میں اساتذہ پر ڈنڈے برسائے جاتے ہیں۔ ریاست میں قانون وانصرام کی صورت حال بہت خراب ہوگئی ہے اور چاروں طرف زمین مافیا ؤں کا راج ہے۔ریاست میں بدعنوانی کی کوئی حد نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ یہ تمام مسائل ان انتخابات میں کانگریس پوری مضبوطی کے ساتھ اٹھائے گی۔ انہوںنے کہا کہ 15 لاکھ نوکریوں کا حساب مانگا جائے گا جو گزشتہ تین مہینوں میں اس حکومت کی پالیسیوں کی وجہ سے لوگوں نے گنوائی ہے۔گزشتہ کچھ مہینوں میں شیئر بازورں میں 20 لاکھ کروڑ روپے ڈوب گئے ہیں۔ یہ مسئلہ بھی عوام تک لے جایا جائے گا۔


انہوں نے کہا کہ گزشتہ تین چار مہینوں میں بہت سے کارخانے بند ہوئے ہیں۔ کئی بڑے کارخانے بندہونے کے کگار پر ہیں۔ کھیڑا نے سابق وزیر خزانہ پی چدمبرم کا نام لئے بغیر کہا کہ ایک طرف تو ایک سابق مرکزی وزیر کو بغیر کسی ثبوت، بغیر کسی وجہ سے جیل میں رکھتے ہیں دوسری طرف ایک دیگر مرکزی وزیر ثبوت اور ایک لڑکی کے بیان کے باوجود اسے فائیو اسٹار’ٹریٹمنٹ‘ دیا جاتا ہے۔

کھیڑا نے کہا کہ حکومت کے ایسے ’کارناموں‘ کو عوام کے سامنے لایاجائے گا۔انہوںنے حکومت پر ’ہیڈ لائن منیجمنٹ‘ اور ایویمنٹ منیجمنٹ‘ کرنے کا الزام لگایا اوروہ سلگتے ہوئے مسائل کا حل کرنے میں ناکام رہی ہے۔ بڑے مسائل کے مستقبل حل کے بجائے ہیرا پھیری کئے جارہے ہیں۔ جھارکھنڈ اسمبلی انتخابات کے اعلان نہیں ہونے پر تنقید کرتے ہوئے کھیڑا نے کہا کہ ’ون نیشن۔ون پول‘ کی بات کہنے والے تین ریاستوں میں ایک ساتھ انتخابات نہیں کراپارہے ہیں۔


لائف انشورنس کمپنی سے متعلق ایک سوال کے جواب میں کھیڑا نے کہا کہ ایل آئی سی ایک ایسا ادارہ ہے جس پر لوگوں کو اعتماد تھا۔ جہاں لوگ اپنی چھوٹی چھوٹی سرمایہ کاری کرکے چین کی نیند سوتے تھے۔ اس حکومت نے تمام ایسے اداروں پر مداخلت کی ہے۔ ریزرو بینک آف انڈیا (آر بی آئی) کی ریزرو پونجی لی گئی ہے۔ پوری معیشت پر گھریلو اوربیرونی سرمایہ کاروں کا یقین ختم ہوچکا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


Published: 22 Sep 2019, 7:10 AM