حکومت مہنگائی سے راحت کے لئے پٹرول اور ڈیزل پر ایکسائز ڈیوٹی ہٹائے: کانگریس

کانگریس ترجمان اجے مکان نے ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ مودی حکومت بین الاقوامی مارکیٹ میں خام تیل کی قیمت کم ہونے کے باوجود ہر سال پٹرولیم مصنوعات سے 189711 کروڑ روپے حاصل کرتی رہی ہے۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

نئی دہلی: آسمان چھوتی مہنگائی کو لے کر آج ایک بار پھر کانگریس نے مرکز کی مودی حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا۔ ساتھ ہی مطالبہ کیا کہ جلد از جلد پٹرول اور ڈیزل کو گڈس اینڈ سروس ٹیکس (جی ایس ٹی) کے دائرے میں لاکر عوام کو مہنگائی سے راحت دی جائے، اور اس کے لیے پٹرول-ڈیزل پر لگائی جانے والی ایکسائز ڈیوٹی فوری طور پر واپس لی جانی چاہئے۔

کانگریس ترجمان اجے ماکن نے مودی حکومت میں لگاتار بڑھ رہی مہنگائی کے تعلق سے بہت تفصیلی جانکاری ایک پریس کانفرنس کے دوران دی۔ انھوں نے کہا کہ حکومت کو پٹرولیم مصنوعات کو جی ایس ٹی کے دائرے میں لانے کے لئے کام کرنا چاہئے اور گزشتہ سات برسوں کے دوران اس نے پٹرول و ڈیزل پر ایکسائز ڈیوٹی لگا کر جو فائدہ کمایا ہے اسے بند کر کے ملک کے عوام کو اب مہنگائی سے نجات دینی چاہئے۔


اجے ماکن نے کہا کہ بین الاقوامی مارکیٹ میں خام تیل کی قیمت جس طرح سے کم ہوئی، اس کا فائدہ لوگوں کو ملنا چاہئے۔ پٹرول، ڈیزل اور رسوئی گیس کی قیمت بین الاقوامی مارکیٹ میں خام تیل کی قیمت میں ہوئی کمی کے مطابق کم کی جانی چاہئے۔ انھوں نے مزید کہا کہ حکومت الزام لگا رہی ہے کہ کانگریس تیل بونڈ لے کر آئی تھی جبکہ حقیقت یہ ہے کہ پہلی بار بی جے پی حکومت اپریل 2002 میں 9000 کروڑ روپے کے تیل بونڈ لے کر آئی تھی۔

حکومت مہنگائی سے راحت کے لئے پٹرول اور ڈیزل پر ایکسائز ڈیوٹی ہٹائے: کانگریس

کانگریس ترجمان ماکن نے مرکز کی مودی حکومت میں سبسڈی اور ایکسائز ڈیوٹی کے تعلق سے تفصیل بیان کرتے ہوئے کہا کہ بی جے پی حکومت نے پٹرول و ڈیزل پر سبسڈی 12 گنا کم کی جبکہ ایکسائز ڈیوٹی میں 3 گنا اضافہ کر کے پٹرول مصنوعات سے خوب فائدہ کمایا ہے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ صرف 21-2020 میں مودی حکومت نے پٹرول و ڈیزل پر ٹیکس لگا کر 453812 کروڑ روپے کی کمائی کی ہے۔ اس مدت میں کی گئی یہ کمائی 14-2013 کے مقابلے تین گنا سے زیادہ ہے۔ اس طرح سات برسوں کے دوران اس حکومت نے پٹرول اور ڈیزل پر سنٹرل ٹیکس 23.87 اور 28.37 روپے فی لیٹر کی شرح سے لگا کر موٹی کمائی کی ہے۔

حکومت مہنگائی سے راحت کے لئے پٹرول اور ڈیزل پر ایکسائز ڈیوٹی ہٹائے: کانگریس

کانگریس لیڈر نے اپنی بات کو آگے بڑھاتے ہوئے یہ بھی کہا کہ مودی حکومت بین الاقوامی مارکیٹ میں خام تیل کی قیمت کم ہونے کے باوجود ہر سال پٹرولیم مصنوعات سے 189711 کروڑ روپے حاصل کرتی رہی ہے۔ اس حکومت کی مدت کار میں لوگ بے تحاشہ مہنگائی سے پریشان ہیں لیکن حکومت کی طرف سے عوام کو راحت دینے کے لئے کوئی قدم نہیں اٹھایا جا رہا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔