نیٹ امتحان تنازعہ: لکھنؤ میں کانگریس کا احتجاجی مظاہرہ، ریاستی صدر سمیت 100 افراد حراست میں

احتجاج کے دوران مظاہرین اور پولیس کے درمیان تصادم ہوا۔ مظاہرین نے سڑکوں پر لگائی گئی رکاوٹوں کو ہٹانے کی کوشش کی جس کے بعد کانگریس کے ریاستی صدر سمیت تقریباً 100 لوگوں کو پولیس نے حراست میں لے لیا۔

<div class="paragraphs"><p>یوپی کانگریس کے صدر اجے رائے / تصویر:&nbsp;@INCUttarPradesh</p></div>

یوپی کانگریس کے صدر اجے رائے / تصویر:@INCUttarPradesh

user

قومی آوازبیورو

اتر پردیش کانگریس کے صدر اجے رائے کی قیادت میں کانگریس نے راجدھانی لکھنؤ میں یو جی سی نیٹ اور نیٹ یوجی امتحانات میں مبینہ پیپر لیک کے خلاف زبردست احتجاج کیا۔ اس احتجاج کے دوران اسمبلی کا گھیراؤ کرنے والے مظاہرین اور پولیس کے درمیان تصادم ہوا۔ مظاہرین نے سڑکوں پر لگائی گئی رکاوٹوں کو ہٹانے کوشش کی جس کے بعد کانگریس کے ریاستی صدر اجے رائے سمیت تقریباً 100 لوگوں کو لکھنؤ پولیس نے حراست میں لے لیا۔

اس احتجاج کے بارے میں یوپی کانگریس کے صدر اجے رائے نے سوشل میڈیا پلیٹ فارم ’ایکس‘ پر ایک ویڈیو پوسٹ کیا ہے اور لکھا ہے کہ ’ہر زور ظلم کے ٹکر میں، سنگھرش ہمارا نعرہ ہے۔ نیٹ اور یو جی سی-نیٹ پیپر لیک کے خلاف احتجاج میں مرکزی وزیر تعلیم دھرمیندر پردھان کے استعفیٰ کا مطالبہ کرتے ہوئے انڈین نیشنل کانگریس کا احتجاجی مظاہرہ، اترپردیش کانگریس کمیٹی نے آج لکھنؤ میں زوردار احتجاجی مظاہرہ کیا اور گرفتاری دی۔ بی جے پی حکومت میں آئے دن ہو رہے پیپر لیک نے پورے تعلیمی نظام کو زمیں بوس کر دیا ہے۔ ہندوستان کے 33 لاکھ طلباء کے مستقبل کی حفاظت کے لیے ہم کانگریسی میدان میں۔‘


لکھنؤ میں ریاستی صدر اجے رائے کی گرفتاری کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے لکھنؤ شہر صدر راگھویندر چوبے نے کہا کہ یوگی آدتیہ ناتھ کی پولیس نے آج لکھنؤ میں نیٹ امتحان میں دھاندلی کے خلاف احتجاج کرنے والے ریاستی صدر اجے رائے کو گرفتار کر لیا ہے۔ اجے رائے کی گرفتاری یوگی حکومت کی بزدلی کو ظاہر کرتی ہے۔ تاناشاہ حکومت سن لے کہ کانگریس پارٹی نوجوانوں کو ہر قیمت پر انصاف دلا کر رہے گی۔ انہوں نے مزید کہا کہ فروری میں پولیس ریکروٹمنٹ اور ریویو آفیسر امتحان کا پیپر لیک ہونے کے بعد اب نیٹ امتحان کو مذاق بنا دیا گیا ہے۔ اب یو جی سی-نیٹ کا امتحان بھی لیک ہونے کے بعد منسوخ ہو گیا ہے۔ بی جے پی حکومت میں پیپر مافیا ایک کے بعد ایک امتحانی پرچے لیک کر کے طلبہ کے مستقبل سے کھیل رہے ہیں۔

راگھویندر چوبے نے کہا کہ مودی-یوگی حکومت میں شفاف طریقے سے کوئی امتحان نہیں لیا جا رہا ہے۔ بھرتی کے امتحانات کے کئی پرچے پہلے ہی لیک ہو چکے ہیں۔ مودی-یوگی حکومت نے طلبہ اور نوجوانوں کے مستقبل کو تاریکی میں ڈال دیا ہے۔ اجے رائے کی آج کی گرفتاری قابل مذمت ہے۔ ہم کانگریسی سڑکوں سے ایوان تک لڑیں گے۔

واضح رہے کہ گزشتہ کل (20 جون) کانگریس کے رکن پارلیمنٹ راہل گاندھی نے پیپر لیک ہونے اور نیٹ امتحان میں دھاندلی سے پریشان طلباء سے ملاقات کی تھی۔ راہل گاندھی نے طلبہ کو یقین دلایا تھا کہ کانگریس پارٹی متاثر طلبہ کو انصاف دلانے کے لیے سڑک سے لے کر پارلیمنٹ تک جدوجہد کرے گی۔

Follow us: Facebook, Twitter, Google News

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔