کانگریس رکن اسمبلی جگنیش میوانی کو آسام پولیس نے کیا گرفتار

گجرات کے وڈگام سے کانگریس رکن اسمبلی جگنیش میوانی کو آسام پولیس نے گرفتار کیا ہے۔ پولیس انہیں احمد آباد لے گئی ہے جہاں سے گوہاٹی لے جانے کی خبر ہے۔

جگنیش میوانی، تصویر آئی اے این ایس
جگنیش میوانی، تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

کانگریس کے رکن اسمبلی اور دلت رہنما جگنیش میوانی کو آسام پولیس نے گرفتار کیا ہے۔ جگنیش کو گجرات کے پالن پور سرکٹ ہاؤس سے گرفتار کیا گیا۔ بتایا جا رہا ہے کہ جگنیش میوانی کو آسام میں درج ایک معاملے میں گرفتار کیا گیا ہے۔ پولیس سب سے پہلے جگنیش میوانی کو احمد آباد لے گئی۔ وہاں سے انہیں آسام لے جایا جا رہا ہے۔ واضح رہے جگنیش گجرات کی وڈگام اسمبلی سیٹ سے ایم ایل اے ہیں۔

خبروں کے مطابق میوانی کو بدھ کی رات پالن پور سرکٹ ہاؤس سے گرفتار کیا گیا۔ اے بی پی نیوز پوٹل پر شائع خبر کے مطابق میوانی کی ٹیم سے وابستہ ایک کارکن نے بتایا کہ پولیس نے ابھی تک ایف آئی آر کی کاپی شیئر نہیں کی ہے۔ آسام میں ان کے خلاف درج کچھ مقدمات کے بارے میں ہی معلومات دی گئی ہیں۔


میوانی کو احمد آباد لے جایا گیا ہے، جہاں سے انہیں گوہاٹی لے جانے کی خبر ہے۔ جگنیش میوانی کے حامیوں کے مطابق آسام پولیس کی ٹیم نے انہیں آسام میں درج کیس کے سلسلے میں گرفتار کیا ہے۔ جبکہ جگنیش میوانی نے کہا کہ انہیں ان کے ایک ٹوئٹ کے سلسلے میں گرفتار کیا گیا ہے۔ تاہم پولیس نے انہیں کوئی صحیح اطلاع نہیں دی ہے۔ میوانی نے کہا کہ وہ کسی جھوٹی شکایت سے نہیں ڈرتے۔ میوانی نے کہا کہ وہ اپنی لڑائی جاری رکھیں گے۔

آدھی رات کو کانگریس لیڈر میوانی کی حمایت میں سڑکوں پر ان کے حامی نکل آئے۔ کانگریس کے ریاستی صدر جگدیش ٹھاکور سمیت کانگریس ارکان احمد آباد ایئرپورٹ پہنچے۔ انہوں نے جگنیش کی حمایت میں اور آسام پولیس کے خلاف نعرے لگائے۔


میوانی کی گرفتاری کے بارے میں جگدیش ٹھاکور نے کہا کہ جگنیش پر آر ایس ایس کے خلاف ٹوئٹ کرنے پر شکایت درج کرائی گئی تھی۔ یہ ایک ایم ایل اے کو دھمکانے کی کوشش ہے۔ ایسی شکایت سے نہ تو جگنیش ڈرتے ہیں اور نہ ہی کانگریس۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس کی قانونی ٹیم جگنیش کے لیے لڑے گی۔ میوانی کے وکیل پریش واگھیلا نے ایک بیان میں کہا کہ ٹوئٹ معاملے میں شکایت درج ہوئی ہے۔

Follow us: Facebook, Twitter, Google News

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔