مہاراشٹر: ’مجھے مت دیکھو یوں روشنی میں لا کر، سیاست ہوں میں، کپڑے نہیں پہنتی‘

کانگریس لیڈر رندیپ سرجے والا نے دیویندر فڑنویس کے ذریعہ مہاراشٹر وزیر اعلیٰ عہدہ کا حلف لیے جانے کے بعد ایک ٹوئٹ میں لکھا کہ ’’مجھے مت دیکھو یوں روشنی میں لا کر، سیاست ہوں میں، کپڑے نہیں پہنتی‘‘۔

رندیپ سرجے والا
رندیپ سرجے والا
user

قومی آوازبیورو

نئی دہلی: کانگریس نے مہاراشٹر میں راتوں رات تبدیل ہوئے واقعات کو سیاسی فریب اور عوامی تائید کے ساتھ دھوکہ قرار دیا ہے۔ کانگریس میڈیا سیل کے سربراہ رنديپ سنگھ سرجےوالا نے آج ٹوئٹ کرکے اس واقعہ پر طنز کرتے ہوئے کہاکہ ’’مجھے مت دیکھو یوں روشنی میں لا کر، سیاست ہوں میں، کپڑے نہیں پہنتی‘‘۔ انہوں نے اسے سیاسی دھوکہ قرار دیتے ہوئے کہاکہ ’’اسے کہتے ہیں: مینڈیٹ سے فریب، جمہوریت کی سپاری‘‘۔

رندیپ سرجے والا نے اپنے ٹوئٹر ہینڈل سے مذکورہ ٹوئٹ کے علاوہ بھی ایک ٹوئٹ کیا جس میں انھوں نے دیویندر فڑنویس کے ذریعہ 26 ستمبر 2014 کو کیے گئے ایک ٹوئٹ کی تصویر شیئر کی ہے۔ اس ٹوئٹ میں دیویندر فڑنویس نے لکھا تھا کہ ’’بی جے پی کبھی، کبھی، کبھی بھی این سی پی کے ساتھ اتحاد نہیں کرے گی۔ غلط باتیں پھیلائی جا رہی ہیں۔ ہم نے ان کی بدعنوانی سے اسمبلی میں پردہ اٹھایا۔ وہاں دوسرے لوگ خاموش تھے۔‘‘ اس ٹوئٹ کے ساتھ سرجے والا نے لکھا ہے کہ ’’اقتدار کی ہوس اصول اور بدعنوانی کو دھو دیتی ہے۔‘‘

اس سے پہلے کانگریس کے سینئر لیڈر راشد علوی نے کہا تھا کہ مہاراشٹر میں اچانک رونما ہوئے واقعات سیاسی چالاکی اور سیاستدانوں کے فریب کا نتیجہ ہے۔ نیشنلسٹ کانگریس پارٹی (این سی پی) کے سربراہ شرد پوار کو کانگریس کو دھوکہ دینے سے متعلق سوال پر علوی نے کہا کہ یہ سیاستدانوں کی چالاکی ہے کہ وہ اقتدار کے لئے کچھ بھی کر سکتے ہیں۔ انہوں نے وزیر اعظم نریندر مودی کو بھی ہدف تنقید بناتے ہوئے کہا کہ پی ایم مودی کے نئے ہندوستان میں اسی طرح کی سیاست ہو رہی ہے۔ ان کو صرف اقتدار چاہیے اور ان کو نظریات سے کوئی سروکار نہیں ہے۔

(یو این آئی ان پٹ کے ساتھ)

next