لوک سبھا انتخابات: راہل اور دیوگوڑا میں بن گئی بات! بی جے پی کی راہ مشکل

سابق وزیر اعظم اور جنتا دل سیکولر کے سربراہ ایچ ڈی دیوگوڑا نے راہل گاندھی سے ملاقات کے بعد میڈیا کو بتایا کہ انھوں نے کرناٹک میں 10 سیٹ کا مطالبہ کیا ہے۔ باضابطہ اعلان 10 مارچ کو ہونے کا امکان ہے۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا

قومی آوازبیورو

لوک سبھا انتخابات کے مدنظر مودی بریگیڈ کو شکست فاش دینے کے مقصد سے پورے ملک میں اپوزیشن اتحاد کی کوششیں چل رہی ہیں اور اس معاملے میں کرناٹک کا نقشہ صاف ہوتا ہوا نظر آ رہا ہے۔ 6 مارچ کو کانگریس صدر راہل گاندھی اور سابق وزیر اعظم و جنتا دل سیکولر کے سربراہ ایچ ڈی دیوگوڑا نے انتہائی اہم ملاقات کی۔ ملاقات کے بعد دیوگوڑا نے پہلا رد عمل ظاہر کرتے ہوئے میڈیا سے بتایا کہ ’’ریاست میں کل 28 لوک سبھا سیٹیں ہیں جن میں سے 10 سیٹیں میں نے حاصل کی ہیں۔ لیکن اس تعلق سے راہل گاندھی آخری فیصلہ کے سی وینوگوپال اور دانش علی کے ساتھ بات چیت کے بعد لیں گے۔‘‘

دراصل جنتا دل سیکولر کرناٹک میں کانگریس کے ساتھ مل کر حکومت کر رہی ہے اور آئندہ لوک سبھا انتخابات میں دونوں ہی پارٹیاں ایک ساتھ مل کر میدان میں اترنے کا ارادہ رکھتی ہیں۔ 6 مارچ کو راہل گاندھی اور دیوگوڑا کی ملاقات اسی تعلق سے ہوئی۔ میٹنگ میں اے آئی سی سی کرناٹک کے جنرل سکریٹری کے سی وینوگوپال اور جنتا دل سیکولر کے قومی جنرل سکریٹری دانش علی بھی موجود تھے۔ دیوگوڑا نے میڈیا سے بات چیت کے دوران اس میٹنگ کے بارے میں بتایا کہ ’’دونوں پارٹیوں کے درمیان لوک سبھا انتخابات کے تعلق سے یہ پہلی سنجیدہ گفتگو تھی۔ اس سے قبل ایک میٹنگ میں راہل جی سے میں نے 12 سیٹوں کا مطالبہ کیا تھا، لیکن آج میٹنگ میں 10 سیٹیں دینے کی گزارش کی ہے۔‘‘

دیوگوڑا نے امید ظاہر کی ہے کہ وینوگوپال اور دانش علی سے بات چیت کر کے راہل گاندھی باضابطہ سیٹوں کے تعلق سے اعلان کریں گے اور امید ہے کہ 10 مارچ تک پوری تصویر لوگوں کے سامنے آ جائے گی۔ دیوگوڑا نے میڈیا کو یہ بھی بتایا کہ سیٹوں کے معاملے میں تصویر صاف ہونے کے بعد ہم بیٹھ کر یہ طے کریں گے کہ کس سیٹ سے کون سی پارٹی امیدوار کھڑے کرے گی اور پھر انتخابی لائحہ عمل تیار کیا جائے گا۔