سی اے جی ایک عظیم وراثت، حکومت میں شفافیت بڑھانے میں مددگار: وزیر اعظم مودی

وزیر اعظم نے کہا کہ وقت کے ساتھ ساتھ سی اے جی کی افادیت میں اضافہ ہوا ہے اور اس کے بارے میں تاثر بھی بدل گیا ہے۔ پہلے حکومت بمقابلہ سی اے جی کی سوچ بدلی تھی، آج وہ سوچ بدل گئی ہے۔

پی ایم مودی، تصویر یو این آئی
پی ایم مودی، تصویر یو این آئی
user

یو این آئی

نئی دہلی: وزیر اعظم نریندر مودی نے کمپٹرولر اینڈ آڈیٹر جنرل (سی اے جی) کو ملک کے لیے ایک بڑی میراث قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ یہ ادارہ سرکاری کام میں شفافیت بڑھانے میں مددگار ہے۔ پی ایم مودی منگل کو سی اے جی ہیڈکوارٹر میں اس آئینی ادارہ کے پہلے آڈٹ ڈے کی تقریبات سے خطاب کر رہے تھے۔ اس موقع پر انہوں نے سی اے جی ہیڈ کوارٹر میں پہلے وزیر داخلہ سردار ولبھ بھائی پٹیل کے مجسمہ کی نقاب کشائی بھی کی۔ اس موقع پر سی اے جی گریش چندر مرمو بھی موجود تھے۔

وزیر اعظم نے کہا کہ وقت کے ساتھ ساتھ سی اے جی کی افادیت میں اضافہ ہوا ہے اور اس کے بارے میں تاثر بھی بدل گیا ہے۔ پہلے حکومت بمقابلہ سی اے جی کی سوچ بدلی تھی، آج وہ سوچ بدل گئی ہے۔ حکومت سی اے جی کی تمام تجاویز کو قبول کرتی ہے۔ "ایک وقت تھا جب ملک میں آڈٹ کو ایک خوف اور صرف خوف کی نظر سے دیکھا جاتا تھا۔ سی اے جی بمقابلہ حکومت یہ ہمارے نظام کی عمومی سوچ بن گئی تھی، لیکن آج یہ ذہنیت بدل گئی ہے۔ آج آڈٹ کو ویلیو ایڈیشن کا ایک اہم حصہ سمجھا جاتا ہے۔ لیکن ہم نے پچھلی حکومتوں کی سچائی پوری ایمانداری کے ساتھ ملک کے سامنے رکھی۔


وزیراعظم نے کہا کہ ہم مسائل کو پہچانیں گے تب ہی ہم ان کا حل تلاش کر سکیں گے۔ اس سے قبل ملک کے بینکنگ سیکٹر میں شفافیت نہ ہونے کی وجہ سے مختلف طریقوں پر عمل کیا جاتا تھا۔ مثالوں کا حوالہ دیتے ہوئے، انہوں نے کہا ’’کسٹم کا رابطہ سے پاک نظام، ازخود تجدید کاری، انکم ٹیکس کی شناخت کے بغیر تفتیش، خدمات کے لیے آن لائن درخواست کی سہولت، ان تمام اصلاحات نے حکومت کی غیر ضروری مداخلت کو ختم کر دیا ہے‘‘۔

مودی نے کہا کہ ہمارے ملک میں کئی دہائیوں سے سی اے جی کی شناخت سرکاری فائلوں اور کتابوں کے درمیان لڑی جانے والی تنظیم کے طور پر رہی ہے۔ یہ سی اے جی کے لوگوں کی شبیہ تھی۔ وزیر اعظم نے کہا ’’مجھے خوشی ہے کہ آپ تیزی سے تبدیلی لا رہے ہیں، عمل کو جدید بنا رہے ہیں‘‘۔ انہوں نے کہا کہ آج سی اے جی جدید تجزیہ-سافٹ ویئر ٹولز، جغرافیائی معلومات اور سیٹلائٹ سے لی گئی تصاویر کا استعمال کر رہا ہے۔


انہوں نے کہا کہ آج ہم ایک ایسا نظام بنا رہے ہیں جس میں ’سرکار سروم‘ کی سوچ کم ہو رہی ہے اور حکومت کا عمل دخل بھی کم ہو رہا ہے، اور آپ کا کام بھی آسان ہو رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جب آڈٹ شفافیت میں اضافہ کرتا ہے تو خود تصدیقی کا کام آسان ہو جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان کی حکومت ’کم سے کم حکومت، زیادہ سے زیادہ گورننس‘ یعنی کم سے کم کنٹرول اور زیادہ سے زیادہ سمت کے طریق کار پر کام کرتی ہے۔

وزیر اعظم نے پچھلی حکومتوں میں بینکوں میں مداخلت کے برے اثرات کا بھی حوالہ دیا اور کہا کہ اس کے نتیجے میں بینکوں میں بلاک شدہ قرضوں (این پی اے) میں اضافہ ہوا۔ مودی نے کہا، ’’آپ ماضی میں این پی اے کو قالین کے نیچے چھپانے کے لیے کیے گئے کام کو اچھی طرح جانتے ہیں۔ انہوں نے کیگ کی نئی کارکردگی میں اصلاحات کی ستائش کرتے ہوئے کہا ’’مجھے خوشی ہے آپ تیزی کے ساتھ تبدیلی لارہے ہیں، عمل کو جدید بنا رہے ہیں آج جدید آلات اور ڈیٹا کا استعمال ہو رہا ہے۔


مودی نے کہا ’’آج ہم دنیا کا سب سے بڑا ویکسینیشن پروگرام بھی چلا رہے ہیں۔ صرف چند ہفتے پہلے، ملک نے 100 کروڑ ویکسین کی خوراک کا سنگ میل عبور کیا۔ پرانے زمانے میں کہانیوں کے ذریعے معلومات کی ترسیل ہوتی تھی۔ تاریخ کہانیوں کے ذریعے لکھی جاتی تھی لیکن آج 21ویں صدی میں ڈیٹا ہی معلومات ہے اور آنے والے وقت میں ہماری تاریخ کو بھی ڈیٹا کے ذریعے دیکھا اور سمجھا جائے گا۔ آڈٹ ڈے کا انعقاد سی اے جی کے تاریخی آغاز اور حکومت کے کام میں شفافیت لانے اور جوابدہی کو بڑھانے میں اس ادارے کے تعاون کو اتسو کی شکل میں منانے کے لئے شروع کیا گیا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔