بی جے پی 2022 کے انتخابات میں 400 سیٹوں پر شکست کا سامنا کرے گی: اکھلیش

اکھلیش یادو نے کہا کہ عوام میں بی جے پی کے سلسلے میں کافی ناراضگی ہے۔ بی جے پی کا صفایا یقینی ہے۔ تبدیلی کا پیغام پورے ملک میں جا رہا ہے۔ عوام 400 سیٹوں پر بی جے پی کو شکست سے دو چار کریں گے۔

اکھلیش یادو، تصویر ٹوئٹر @yadavakhilesh
اکھلیش یادو، تصویر ٹوئٹر @yadavakhilesh
user

یو این آئی

امبیڈکر نگر: سماجوادی پارٹی(ایس پی) سربراہ اکھلیش یادو نے کہا کہ آنے والے اسمبلی انتخابات میں انقلاب درج ہوگا اور بی جے پی کو 400 سیٹوں پر شکست کا سامنا کرنا پڑے گا۔ بھانو متی اسمارک پی جی کالج میں منعقد جنادیش مہا ریلی سے خطاب کرتے ہوئے اکھلیش نے کہا کہ عوام میں بی جے پی کے سلسلے میں کافی ناراضگی ہے۔ بی جے پی کا صفایا یقینی ہے۔ انتخابات میں پچھڑوں کا انقلاب ہوگا۔ اور سال 2022 میں بڑی تبدیلی دستک دے گی۔ تبدیلی کا پیغام پورے ملک میں جارہا ہے۔ عوام 400 سیٹو ں پر بی جے پی کو شکست سے دو چار کریں گے۔

اس موقع پر بی ایس پی کے سینئر لیڈر و سابق وزیر لال جی ورما اور اچل راج بھر نے سماج وادی پارٹی کی رکنیت حاصل کی۔ اکھلیش نے ایس پی حکومت میں مہنگائی سے عوام کو نجات دلانے اور بنکروں۔غریبوں کی بجلی شرحوں میں راحت دلانے کا تیقن دیا۔ بنکروں کو فلیٹ ریٹ پر بجلی ملے گی۔ پرانی پنشن بحال کریں گے۔


انہوں نے کہا کہ ڈاکٹر رام منوہر لوہیا اور ڈاکٹر بھیم راؤ امبیڈکر کے نظریات پر چلنے سے ہی مساوی سماج کی تعمیر کا خواب پورا ہوسکتا ہے۔ انہوں نے ملک کی سیاست میں تبدیلی لانے کی کوشش کی تھی۔ آج ذات، مذہب میں تقسیم کی کوشش ہو رہی ہے۔ ہمیں جمہوریت اور آئین کو بچانے کی جدوجہد کرنی ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ سماج وادی پارٹی کو بڑے پیمانے پر عوامی حمایت مل رہی ہے۔ بی جے پی جہاں انتخاب ہاری ہے وہاں قیمتوں میں کمی آئی ہے۔ بی جے پی اترپردیش میں شکست سے دوچار ہوگی تو یہاں بھی مہنگائی کم ہوجائے گی۔

سابق وزیر اعلی نے کہا کہ بی جے پی حکومت نے سماج کے سبھی طبقات کے ساتھ ناانصافی کی ہے۔ کسانوں کو برباد کیا ہے۔ بی جے پی کی تین انجن کی حکومت یعنی مرکزی حکومت، ریاستی حکومت اور لکھیم پور کھیری کے وزیر سبھی نے کسانوں کو کچلنے کا کام کیا ہے۔ کسان کی آمدنی دو گنی نہیں ہوئی۔ انسانی حقوق کمیشن نے پولیس حراست میں ہوئی اموات پر سب سے زیادہ نوٹس اترپردیش حکومت کو دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس حکومت نے غریبوں سے ووٹ لیا۔ امیروں سے نوٹ لیا اور سرکاری ملکیت کو فروخت کر دیا۔


انہوں نے کہا کہ غریبوں کے مفاد میں سماجوادی پارٹی کی جتنی اچھی اسکیمات تھیں وہ سب بی جے پی حکومت نے بند کردی ہیں۔ لال سلنڈر تقسیم کرنے والوں نے اس کی قیمت آسمان تک چڑھا دی ہیں۔ ہوسکتا ہے کہ مہنگائی کم کرنے کے لئے بی جے پی حکومت سلنڈر کا نام اور رنگ تبدیل کردے۔ پٹرول 100 روپئے کو عبور کرچکا ہے۔ اس حکومت میں بجلی کے بل کا کرنٹ غریبوں کو لگ رہا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔