بی جے پی لیڈران نے ایودھیا کی طرح مہاراشٹر میں بھی مندروں کی زمینیں ہڑپ لیں: نواب ملک

نواب ملک نے کہا کہ بی جے پی لیڈران نے رام کے نام پر ووٹ مانگنا، چندہ جمع کرنا اور مہاراشٹر میں مندروں کی زمینوں پر قبضہ کرنے کا کام کیا ہے۔

نواب ملک / ٹوئٹر
نواب ملک / ٹوئٹر
user

قومی آوازبیورو

ممبئی: این سی پی لیڈر اور مہاراشٹر کے وزیر نواب ملک نے الزام عائد کیا ہے کہ بی جے پی لیڈران ملک بھر میں مندروں کی زمینیں ہڑپ رہے ہیں اور وہ ایودھیا کے بعد مہاراشٹر میں اسی طرح کا کام کر رہے ہیں۔ نواب ملک نے کہا کہ بی جے پی لیڈران نے رام کے نام پر ووٹ مانگنا، چندہ جمع کرنا اور مہاراشٹر میں مندروں کی زمینوں پر قبضہ کرنے کا کام کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی کی رام کے نام سے لوٹ کا کھیل اب عوام کے سامنے آ رہا ہے۔

میڈیا رپورٹ کے مطابق اتر پردیش کے ایودھیا میں بابری مسجد کے مقام پر رام مندر تعمیر کا راستہ صاف ہونے کے بعد پورا علاقہ زمین کی خرید و فروخت کا مرکز بن گیا ہے۔ تازہ اطلاعات کے مطابق زیر تعمیر رام مندر کے ارد گرد بی جے پی کے ارکان اسمبلی، کئی بڑے لیڈران، یوپی کے افسران اور ان کے اہل خانہ کے ذریعہ بڑے پیمانے پر زمینیں خریدیں گئی ہیں تاکہ انہیں فائدہ ہو سکے۔


انڈین ایکسپریس کی رپورٹ کے مطابق زیر تعمیر مندر کے آس پاس علاقہ میں بڑے پیمانے پر زمینوں کی خرید و فروخت کے 14 معاملوں کو کھنگالنے سے معلوم ہوا ہے کہ رام مندر کے مقام سے 5 کلو میٹر کے دائرے میں ایک رکن اسمبلی، میئر اور ریاستی او بی سی کمیشن کے رکن نے اپنے نام پر زمین خریدی ہے۔

اس کے علاوہ ڈویزنل کمشنر، سب ڈویزنل مجسٹریٹ، ڈپٹی انسپکٹر جنرل آف پولیس، سرکل آفیسر اور اسٹیٹ انفارمیشن کمشنر کے رشتہ داروں نے بھی زمینیں خریدی ہیں۔ ان میں سے کم از کم پانچ معاملات میں مفادات کا ٹکراؤ پیدا ہوتا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔